آئی پی ایل میچ فکسنگ کیس۔ سی بی آئی نے 3 افرادکو گرفتار کیا

تحقیقاتی ایجنسی کا کہناہے کہ یہ پورا نیٹ ورک پاکستان سے چلایا جارہا تھا۔ اس معاملے میں سی بی آئی نے کیس بھی درج کیاہے۔ میچ فکسنگ اور سٹے بازی کے الزام میں 3 افراد کو گرفتار کرلیا گیاہے۔

ممبئی: سی بی آئی نے ہفتہ کو آئی پی ایل سٹے بازی کو لیکر ایک بڑا انکشاف کیاہے۔ سی بی آئی نے کہاکہ سٹے بازی کے نیٹ ورک نے 2019 میں آئی پی ایل ٹورنامنٹس کے میچوں کے نتائج کو متاثر کرنے کیلئے پاکستان سے موصول ہونے والی معلومات کی بنیاد پر کام کیا۔

تحقیقاتی ایجنسی کا کہناہے کہ یہ پورا نیٹ ورک پاکستان سے چلایا جارہا تھا۔ اس معاملے میں سی بی آئی نے کیس بھی درج کیاہے۔ میچ فکسنگ اور سٹے بازی کے الزام میں 3 افراد کو گرفتار کرلیا گیاہے۔

سی بی آئی نے دہلی، جودھ پور، حیدرآباد اور جے پور میں 7 مقامات پر چھاپے مارے ہیں۔ چھاپوں کے ذریعے 2019 کے آئی پی ایل کو فکس کرنے میں ملوث سنڈیکیٹ کا پردہ فاش کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ الزام ہے کہ اس سیزن میں پاکستان کے خلاف آئی پی ایل میچوں کے نتائج متاثر ہورہے تھے۔

سی بی آئی نے بتایاکہ آئی پی ایل سٹے بازی کے دوران رقم کا لین دین ہوالا کے ذریعہ کیا گیاتھا۔ کچھ لوگ پورے ہندوستان میں نیٹ ورک چلارہے تھے جس کے تحت لوگوں کو آئی پی ایل سٹے بازی کی طرف راغب کیاجا رہاتھا۔ وقاص ملک نامی پاکستانی شہری سے رابطے میں تھے جس کا نمبر ابتدائی تفتیش کے دوران پہلے ہی ٹریس کیاجا چکاہے۔

یہ نیٹ ورک 2013 سے بیٹنگ میں ملوث ہے۔ ان کے درمیان تقریباً 10 کروڑ روپے کا لین دین ہوا تھا۔ سٹے بازوں نے جعلی شناختوں کا استعمال کرتے ہوئے بینک اکاؤنٹس کھولے اور نامعلوم بینک حکام کے ساتھ ملکر صارفین کے دستاویزات حاصل کیے۔ یہ بینک اکاؤنٹس جعلی دستاویزات کی بنیاد پر کھولے گئے تھے۔

سی بی آئی نے ایف آئی آر میں دلیپ کمار، گروم ستیش، گرورام واسو سجن سنگھ، پربھو لال مینا، رام اوتار اور امیت کمار شرما کو ملزم نامزد کیاہے۔ سی بی آئی نے کہاکہ کچھ سرکاری عہدیدار بھی 2010 سے آئی پی ایل سٹے بازی میں سرگرم ہیں۔ اس کے علاوہ کچھ اور نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیاگیاہے۔

سی بی آئی ہندوستان بھر میں سٹے بازی کے نیٹ ورکس کی چھان بین کررہی ہے جن کے پاکستان کے ساتھ براہ راست روابط ہیں۔ کئی شہروں میں کئی افراد زیر تفتیش ہیں۔

ابھی تک تفتیشی ایجنسی کی جانب سے یہ نہیں بتایا گیاکہ کن میچوں کو متاثر کرنے کی کوشش کی گئی۔ 16 مئی 2013 کو آئی پی ایل 6 کے دوران دہلی پولیس نے سری سانتھ اور راجستھان رائلز کے 2 دیگر کھلاڑیوں اجیت چنڈیلا اور انکت چوان کو ممبئی سے اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں گرفتار کیاتھا۔ یہ الزام لگایا گیا تھاکہ سری سانتھ کے کزن اور گجرات کے سابق انڈر 22 کھلاڑی جیجو جناردھن نے اس اسپاٹ فکسنگ میں اہم کردار ادا کیاتھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button