آشیش مشرا کی ضمانت کیخلاف درخواست پر سپریم کورٹ کی 15 مارچ کو سنوائی

مرکزی وزیر مملکت اجے مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش کو الہ آباد ہائی کورٹ نے 10 فروری کو ضمانت دی تھی۔ کسانوں کے افراد خاندان کی جانب سے بھوشن نے ہائیکورٹ کے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی دائرکرتے ہوئے آشیش کی ضمانت کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے لکھیم پور کھیری تشدد معاملہ کے اہم ملزم آشیش مشرا کی ضمانت کے خلاف درخواست پر فوری سنوائی کی اپیل جمعہ کو مسترد کر دی۔ سپریم کورٹ اس معامل کی سماعت 15 مارچ کو کرے گا۔ چیف جسٹس این وی رمنا کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے عرضی گذاروں- ہلاک ہونے والے کسانوں کے اہل خانہ کے وکیل پرشانت بھوشن کی اپیل آج سنوائی کے لیے نامنظورکر دیا۔

 بنچ نے کہا کہ یہ معاملہ 15 مارچ کے لیے فہرست بند کیا جائے گا اور اسی دن مناسب بنچ غورو خوض کرے گی۔ بھوشن نے آج سپریم کورٹ میں ’خصوصی ذکر‘ُ کے دوران عدالت عظمیٰ کے سامنے اپیل کرتے ہوئے بتایا کہ اترپردیش کے ضلع لکھیم پور کھیری تشدد معاملہ میں ایک گواہ پر جمعرات کی رات وہاں حملہ کیا گیا تھا۔ اس لیے اس معاملہ کے کلیدی ملزم آشیش کی ضمانت کے خلاف دائر درخواستوں پر آج سنوائی کی جائے۔

مرکزی وزیر مملکت اجے مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش کو الہ آباد ہائی کورٹ نے 10 فروری کو ضمانت دی تھی۔ کسانوں کے افراد خاندان کی جانب سے بھوشن نے ہائیکورٹ کے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ میں عرضی دائرکرتے ہوئے آشیش کی ضمانت کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔ بھوشن نے بھی 04 مارچ کو جلد سماعت کی درخواست کی تھی۔

 چیف جسٹس رمنا کی سربراہی والی بنچ نے اس کے بعد 11 مارچ کو مناسب بینچ کے سامنے اس معاملے کی سماعت کرنے کی ہدایت دی، لیکن اسے آج کے لیے فہرست بند نہیں کیا گیاتھا۔ چیف جسٹس نے حالانکہ 04 مارچ کو چیف جسٹس نے یہ بھی کہا تھا کہ اس معاملہ کی سماعت کرنے والی بنچ عرضی پر غور وخوض کے لیے دستیاب ہونا چاہیے۔ قابل ذکر ہے کہ ملزم آشیش بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما اور مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا ٹینی کا بیٹا ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button