افغانستان میں نو عمر نوجوانوں کو فوج میں بھرتی نہ کرنے کی ہدایت

طالبان کے سب سے بڑے قائد ملاح ہبت اللہ آخند زادہ نے فوجی عہدیداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے صفوں میں 13 تا19سالہ لڑکوں کو بھرتی نہ کریں۔

کابل: طالبان کے سب سے بڑے قائد ملاح ہبت اللہ آخند زادہ نے فوجی عہدیداروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے صفوں میں 13 تا19سالہ لڑکوں کو بھرتی نہ کریں۔

انہوں نے اپنے ایک فرمان میں بتایا کہ طالبان حکومت کے فوجی ٹھکانہ پر ایسے کسی نوجوان کو آنے کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے اور کسی بھی فوجی کاروائی میں انہیں حصہ نہیں لیناچاہئے۔

انہیں بتایا کہ اس نوعیت کے نوجوان فوجی کاروائیوں کے قابل نہیں ہوتے ہیں اور فوج میں کم عمر ارکان کے وجود سے سازش اور بدنامی پیدا ہوتی ہے۔

اپنے فرمان میں انہوں نے بتایا کہ فوجی عہدیداروں کو سختی سے ہدایت دی گئی ہے کہ وہ اس حکم کو سختی سے روبہ عمل لائیں اور فوجی کمیشن کو اس بات کی ذمہ داری گئی ہے کہ وہ جو لوگ اس حکم کو روبہ عمل لانے میں ناکام رہیں انہیں غیر مسلح کردیاجائے۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button