امریکی تاجر کا 3 کروڑ سے زائد کا پٹرول عوام کو مفت دینے کا اعلان

اس اعلان کے تحت شہرکے 50 اسٹیشنس پرکوئی بھی شخص 50 ڈالر تک کا پٹرول حاصل کرسکتا تھا۔ اعلان ہوتے ہی اسٹیشنس پر فری پٹرول بھروانے والوں کا ہجوم امڈ آیا۔گاڑیوں کی قطاریں لگنے سے اطراف کی سڑکیں بند ہوگئیں۔

واشنگٹن: امریکہ میں پٹرول کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہوگیا ہے اور ایک ماہ کے دوران پٹرول 60 سینٹ سے زائد مہنگا ہوکر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا ہے۔دریں اثنا امریکی ریاست ایلینوائے کے شہر شکاگو میں ایک امریکی تاجر نے 2 لاکھ ڈالر یعنی 3 کروڑ روپے سے زائدکا پٹرول عوام کو مفت دینے کا اعلان کردیا۔

اس اعلان کے تحت شہرکے 50  اسٹیشنس پرکوئی بھی شخص 50  ڈالر تک کا پٹرول حاصل کرسکتا تھا۔ اعلان ہوتے ہی اسٹیشنس پر فری پٹرول بھروانے والوں کا ہجوم امڈ آیا۔گاڑیوں کی قطاریں لگنے سے اطراف کی سڑکیں بند ہوگئیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکہ میں فی گیلن پٹرول کی قیمت 4  ڈالر 63 سینٹ تک پہنچ گئی ہے۔پٹرول مہنگا ہونے کی وجہ کورونا میں کمی کے بعد معاشی سرگرمیوں میں تیزی‘ روس۔ یوکرین جنگ اور امریکہ میں تیل کی لائن کے ایک بڑے معاہدہ کی منسوخی بتائی جارہی ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button