اکبر الدین اویسی کو روینہ ٹنڈن کی حمایت!!

اداکارہ نے لکھا کہ ہندوستان ایک آزاد ملک ہے اور ہر کسی کو عبادت کرنے کا مساوی حق حاصل ہے۔ "ہم ایک روادار نسل ہیں اور رہیں گے۔ یہ ایک آزاد ملک ہے۔

ممبئی: مجلسی قائد اکبر الدین اویسی کے اورنگ آباد کے قریب مغل بادشاہ اورنگ زیب کے مقبرے پر خراج عقیدت پیش کرنے پر مہاراشٹر میں ہنگامہ آرائی کے درمیان، متنازعہ سیاست داں کو ایک غیر متوقع حمایت اس وقت حاصل ہوئی جب اداکارہ روینہ ٹنڈن نے نہ صرف اکبرالدین اویسی کی کھل کر حمایت کی بلکہ ملک کے موجودہ حالات پر بھی انہوں نے بےباکانہ تبصرہ کرتے ہوئے فرقہ پرستوں کو نشانہ بنایا اور تشویش کا اظہار کیا-

اویسی کے مقبرے پر حاضری والے ایک ٹویٹ پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے، اداکارہ نے لکھا کہ ہندوستان ایک آزاد ملک ہے اور ہر کسی کو عبادت کرنے کا مساوی حق حاصل ہے۔ "ہم ایک روادار نسل ہیں اور رہیں گے۔ یہ ایک آزاد ملک ہے۔ اگر آپ کو کسی کی عبادت کرنی ہے، آپ کو اس کا اختیار ہے نیز تمام شہریوں کے لئے حقوق یکساں ہیں –

ایک فعال ٹویٹر صارف؛ موسمیاتی بحران اور حقوق کی خلاف ورزیوں پر لکھنے اور تبصرہ کرنے کے لئے مشہور اداکارہ رقمطراز ہیکہ "کچھ عرصے سے، یہ ایک فیشن بن گیا ہے کہ مادر وطن کو عدم برداشت کا لیبل لگا دیا جائے۔ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ ہم کتنے عدم برداشت کا شکار ہیں‘‘۔

ٹنڈن کا ماضی میں دائیں بازو کی تنظیموں سے آمنا سامنا رہا ہے اور زعفرانی کیمپ سے بھی انکا رشتہ نہیں ہے۔

ادکارہ کا تازہ ترین تبصرہ ایک ایسے وقت منظرعام پر آیا ہے جب مہاراشٹر کی تمام بڑی پارٹیاں جونیر اویسی پر اپنی بندوقیں تانی ہوئی ہیں۔

مہارشٹرا نو نرمان سینا کا کہنا ہیکہ اویسی ریاست میں فرقہ پرستی کو فروغ دینا چاہتے ہیں نیز ان کے خلاف سخت کاروائی کی جانی چاہیے۔

بی جے پی رکن اسمبلی نتیش رانے کا کہنا ہیکہ صرف دس منٹ کے لئے اویسی کو ان کے حوالے کیا جائے، وہ انھیں بھی اس مقام پر پہونچا دیں گے جہاں ہندو مخالف حکمراں مدفن ہے۔

اورنگ آباد کے شیو سینا لیڈر چندرکانت کھیرے نے اس پر اپنا درعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ اورنگ آباد کے ہندو مسلم قوموں کے دونوں افراد اس ظالم حکمراں کے مزار پر نہیی جاتے نیز اویسی کی اس مقبرے پر حاضری ظالم بادشاہ کی تقلید کا ایک ثبوت ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button