ایرانی پاسدارانِ انقلاب کے کرنل کو تہران میں گولی مار دی گئی

ایران کی طاقتور پاسدارانِ انقلاب کے ایک سینئر رکن کو آج موٹر سائیکل پر سوار نامعلوم بندوق برداروں نے تہران میں ان کے گھر کے باہر گولی مار کر ہلاک کردیا۔

تہران: ایران کی طاقتور پاسدارانِ انقلاب کے ایک سینئر رکن کو آج موٹر سائیکل پر سوار نامعلوم بندوق برداروں نے تہران میں ان کے گھر کے باہر گولی مار کر ہلاک کردیا۔

پاسدارانِ انقلاب نے ایران کے دارالحکومت کے وسط میں دن دہاڑے ہونے والے اس حملہ کے بارے میں بہت کم تفصیلات فراہم کی ہیں، تاہم گروپ نے اس ہلاکت کے لیے عالمی غرور کو موردِ الزام ٹھہرایا۔ یہ اصطلاح امریکہ اور اسرائیل کے لیے استعمال کی جاتی ہے۔

اس سے پہلے بھی اس نوعیت کے حملے اسرائیل سے منسوب کیے گئے تھے، جن میں ملک کے نیوکلیر سائنسدانوں کو نشانہ بنانا بھی شامل ہے۔ کسی نے فوری طور پر اس حملہ کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

یو این آئی کے بموجب ایران میں ملک کے اعلیٰ فوجی افسر کرنل سید خدائی کو مسلح حملہ آوروں نے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

بی بی سی نے اتوار کو اطلاع دی کہ مقامی میڈیا کے مطابق کرنل سید خدائی کو دو موٹر سائیکلوں پر سوار مسلح حملہ آوروں نے اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا جب وہ ایران کے دارالحکومت تہران میں اپنے گھر کے باہر ایک کار میں سوار تھے۔

سیکیورٹی فورسز حملہ آوروں کی تلاش میں ہیں۔ کرنل خدائی کو مقدس مقامات کا محافظ کہا جاتا تھا۔ انہوں نے شام اور عراق کی جنگ میں بھی حصہ لیا تھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button