ایم ایس آر ٹی سی ملازمین مسلسل ہڑتال پر

ریاستی ٹرانسپورٹ کے وزیر انیل پراب نے ملازمین کو پیر تک ڈیوٹی پر واپس لوٹنے کا انتباہ دیا تھا اور جو ملازم کام پر واپس نہیں آئے گا اس کے خلاف ایسنشل سروس مینٹیننس ایکٹ کے تحت کارروائی کا بھی انتباہ دیا تھا۔

ممبئی: مہاراشٹراسٹیٹ روڈ ٹرانسپورٹ کارپوریشن (ایم ایس آر ٹی سی) کے ملازمین ریاستی حکومت کے انتباہ کے باوجود اپنے مطالبات پر دباؤ بنانے کے لئے ہڑتال جاری رکھے ہوئے ہیں۔

کارپوریشن کے ہڑتال کرنے والے ملازمین کارپوریشن کو سرکاری ادارے میں ضم کرنے کے مطالبے پربضد ہیں۔ ریاستی ٹرانسپورٹ کے وزیر انیل پراب نے ملازمین کو پیر تک ڈیوٹی پر واپس لوٹنے کا انتباہ دیا تھا اور جو ملازم کام پر واپس نہیں آئے گا اس کے خلاف ایسنشل سروس مینٹیننس ایکٹ کے تحت کارروائی کا بھی انتباہ دیا تھا۔

ایم ای ایس ایم اے کے تحت تمام جرائم ناقابل ضمانت ہیں اور ان کی سزا ایک سال تک قید، 2000 روپے تک جرمانہ یا دونوں ہو سکتی ہے۔

مسٹرپراب نے ہڑتال کرنے والے ملازمین سے کہا تھا کہ پیر تک کام پر حاضر ہوجائیں اور اگر وہ ایسا کرتے ہیں تو ان کی معطلی منسوخ کر دی جائے گی۔

ایک ماہ کی ہڑتال میں اپنی شرکت جاری رکھتے ہوئے احکامات کی خلاف ورزی پر 10 ہزار ملازمین کو معطل کردیا گیا تھا ۔ مسٹر پراب نے کہا کہ حکومت عدالت کے فیصلے کے بعد انضمام پر غور کرے گی۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button