ایک بلب اور فیان کے استعمال پر 3780 روپے کا بل

سی ایل پی قائد بھٹی وکرامارکہ نے جنہوں نے دورہ دہلی کی وجہ سے اپنے عوامی پدیاترا عارضی طور پر ملتوی کی تھی، آج بوناکل سے دوبارہ اپنی یاترا کا آغاز کیا۔

حیدرآباد: سی ایل پی قائد بھٹی وکرامارکہ نے جنہوں نے دورہ دہلی کی وجہ سے اپنے عوامی پدیاترا عارضی طور پر ملتوی کی تھی، آج بوناکل سے دوبارہ اپنی یاترا کا آغاز کیا۔

اپنی پدیاتر کے دوران بھٹی وکرامارکہ ایک شخص کے مکان پہنچنے جہاں انہیں بتایا گیا کہ ایک خاتون کو ایک بلب اور ایک فیان استعمال کرنے پر ماہانہ137 روپے بل آتا تھا اب اس خاتون کو 3,780 روپے کا برقی بل حاصل ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ غریب لوگ کس طرح یہ بھاری بلز ادا کریں گے؟ اور کس طرح اپنی زندگی گذارسکیں گے؟۔ انہوں نے کہا کہ یہ بدقسمتی ہے کہ مرکزی اور ریاستی حکومت کسانوں سے دھان خریدنے کی اپنی ذمہ داری پوری کرنے کی بجائے دھرنا منظم کرتے ہوئے کسانوں کی ہمدردی حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دھان کی خریدی کے مسئلہ پر ٹی آر ایس دہلی میں دھرنا کررہی ہے اور بی جے پی ریاست میں دھرنا منظم کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی 75 سالہ تاریخ میں ایسا دیکھنے میں آیا ہے کہ ٹی آر ایس اور بی جے پی کی حکومتیں ہی کسانوں کے مسائل کو نظر انداز کررہی ہیں۔

بھٹی وکرامارکہ نے پدیاترا کے دوران مختلف خاندانوں سے ملاقات کرتے ہوئے ان کے مسائل سے آگاہی حاصل کی۔ اور اس بات پرافسوس کا اظہار کیا کہ گذشتہ8سال سے حکومت عوام کے مسائل حل کرنے میں ناکام ہوچکی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button