بنگال بی جے پی کے باغی قائدین کو نوٹس وجہ نمائی

باغی قائدین کو وجہ نمائی نوٹس دینے کے بعد ٹھاکر نے کہا تھا کہ میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ پارٹی کسے وجہ نمائی نوٹس جاری کرے گی۔ میں ہر اس شخص کے ساتھ ملاقات کروں گا جو مجھ سے ملنے کے لیے آئے۔ میں ریاست کے برہم قائدین سے بھی بات چیت کروں گا۔

کولکتہ: رتیش تیواری اور جوائے پرکاش مجمدار کو اتوار کے روز جب مخالف پارٹی سرگرمیوں کے لیے شوکاز نوٹس دی گئی تو یہ دونوں باغی بی جے پی قائدین مرکزی مملکتی وزیر جہاز رانی شانتانو ٹھاکر کے ساتھ شمالی چوبیس پرگنہ کے گوبر ڈانگا میں پکنک منا رہے تھے۔

صرف تیواری یا مجمدار نہیں بلکہ ریاستی اور ضلعی سطح کے کئی ناراض قائدین بھی گوبر ڈانگا کے بی جے پی منڈل پریسیڈنٹ آشیش بندو پادھیائے کی قیامگاہ پر جمع تھے اور یہ اشارہ دے رہے تھے کہ نچلی یا متوسط سطح کے قائدین کی بڑی تعداد کی بے اطمینانی کو محض وجہ نمائی نوٹس یا معطلی کے ذریعہ ختم نہیں کیا جاسکتا۔

 باغی قائدین کو وجہ نمائی نوٹس دینے کے بعد ٹھاکر نے کہا تھا کہ میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ پارٹی کسے وجہ نمائی نوٹس جاری کرے گی۔ میں ہر اس شخص کے ساتھ ملاقات کروں گا جو مجھ سے ملنے کے لیے آئے۔ میں ریاست کے برہم قائدین سے بھی بات چیت کروں گا۔

کیا پارٹی ان سب کو خارج کردے گی؟ کیا یہ ممکن ہے؟ یہاں یہ تذکرہ مناسب ہوگا کہ ریاستی بی جے پی یونٹ نے پارٹی میں قیادت کے خلاف اٹھنے والی آوازوں کو لگام لگانے کے لیے مجمدار اور تیواری کو فوری معطل کردیا تھا اور انہیں وجہ نمائی کا بھی وقت نہیں دیا گیا تھا۔ بہرحال وجہ نمائی مکتوب میں یہ کہا گیا تھا کہ پارٹی انہیں جواب دینے کے لیے 15 دن کا وقت دے رہی ہے۔

 اس کی وجہ سے صورتِ حال مزید ابتر ہوگئی تھی۔ ٹھاکر جنہیں اس تحریک کا چہرہ سمجھا جاتا ہے، انہوں نے فوری اعلان کیاتھا کہ بحیثیت رکن پارلیمنٹ اور وزیر میری یہ ذمہ داری ہے کہ میں ان لوگوں سے بات کروں جو اس صورتِ حال سے ناخوش ہیں۔

میں ہر اس شخص سے بات کروں گا جو مجھ سے ملنے کے لیے آئے۔ بونگاؤں پارلیمانی حلقہ میں اور ساری ریاست میں پکنک منائی جائے گی۔ بی جے پی کارکنوں کو راغب کرنے کی یہ ایک کوشش ہے۔

ذریعہ
آئی اےاین ایس

تبصرہ کریں

Back to top button