بھگوا جماعت نے پھوٹ ڈالنے کے سوا کچھ بھی نہیں کیا : سونیا گاندھی

کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کے دن بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ رائے بریلی سے ”سوتیلا سلوک“ کررہی ہے۔ انہوں نے عوام سے خواہش کی کہ وہ یوپی اسمبلی الیکشن میں کانگریس امیدواروں کو ووٹ دیں۔

رائے بریلی(یوپی): کانگریس صدر سونیا گاندھی نے پیر کے دن بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ رائے بریلی سے ”سوتیلا سلوک“ کررہی ہے۔ انہوں نے عوام سے خواہش کی کہ وہ یوپی اسمبلی الیکشن میں کانگریس امیدواروں کو ووٹ دیں۔

سونیا گاندھی نے کووِڈ وباء کے دوران بدانتظامی کے لئے وزیراعظم نریندر مودی اور چیف منسٹر یوپی یوگی آدتیہ ناتھ کو نشانہ ئ تنقید بنایا۔

انہوں نے مرحلہ سوم کی انتخابی مہم کے آخری دن آن لائن خطاب میں کہا کہ یہ الیکشن اہم ہونے جارہا ہے کیونکہ پچھلے 5 برس میں آپ نے ایسی حکومت دیکھی جس نے لوگوں کو بانٹنے کا سوا کچھ بھی نہیں کیا۔

اترپردیش اسمبلی الیکشن میں سونیا گاندھی کی یہ پہلی انتخابی تقریرہے۔ سونیا گاندھی‘ رائے بریلی سے کانگریس کی رکن لوک سبھا ہیں اور رائے بریلی میں ووٹنگ 23 فروری کو ہونے والی ہے۔

انہو ں نے کہا کہ ہم نے آپ کے لئے کئی ترقیاتی اسکیم لائیں لیکن مودی۔ یوگی حکومت نے ان سبھی کو بند کردیا۔ رائے بریلی سے سوتیلا سلوک ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ نے کانگریس کی سیاست دیکھی جو عوام کی خدمت اور عوام کو حقوق دینے پر مبنی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس ورکرس نے گزشتہ 5 سال میں یوپی میں واقعی بڑی محنت کی۔ 8ہزار ورکرس جیلوں میں ڈالے گئے۔ انہیں یہ سزا ریاست میں عوام کے حقوق کے لئے لڑنے پر ملی۔ سونیا گاندھی نے کہا کہ بھائیو بہنوں میں خود کو آپ کے کنبہ کا اٹوٹ حصہ سمجھتی ہوں۔

ہم آپ کی زندگی کو بہتر بنانے والی سیاست کرنے کے پابند ہیں۔ ہم آپ کو وہ رکن اسمبلی دینا چاہتے ہیں جو دن رات آپ کے لئے کام کرتا ہو۔ ہم ایسی پالیسیاں بنانا چاہتے ہیں جو آپ کو بااختیار بناتی ہوں۔ اس الیکشن میں ہاتھ کو مضبوط کیجئے۔

ہاتھ‘ کانگریس کا انتخابی نشان ہے۔ کانگریس کو رائے بریلی میں سخت چیلنج کا سامنا ہے کیونکہ اس کے دونوں ارکان اسمبلی بی جے پی میں شامل ہوگئے اوروہ کنول کے نشان پر الیکشن لڑرہے ہیں۔

سونیا گاندھی نے کسانوں‘ نوجوانوں اور مہنگائی کے مسئلہ پر بھی مرکز اور ریاستی حکومتوں کو نشانہ تنقید بنایا۔ کانگریس صدر نے کہا کہ ریاست میں 12لاکھ سرکاری نوکریاں خالی ہیں لیکن آپ کو نوکری نہیں دی جارہی ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button