”بی جے پی کی اقتدار کی ہوس بڑھ گئی“: کماراسوامی

کماراسوامی نے کہا کہ بی جے پی کی اقتدار کی ہوس اتنی بری ہے کہ آنے والے دنوں میں اس کی وجہ سے واضح اکثریت کی حامل حکومت بھی نہیں بچے گی۔ انہوں نے کہا کہ اکثریت کے ساتھ کامیاب ہونے والی دیگر پارٹیوں کی حکومتوں کو بھی چلنے نہیں دیا جائے گا۔

بنگلورو: سابق ریاستی چیف منسٹر ایچ ڈی کماراسوامی نے بی جے پی پر تنقید کی اور کہا کہ وہ کسی او رپارٹی کو اقتدار میں دیکھنا پسند نہیں کرتی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے اقتدار کی اپنی ہوس بڑھادی ہے۔ بی جے پی کسی اور پارٹی کو اقتدار میں برداشت نہیں کرے گی۔

“ جنتادل ایس پارٹی کے ریاستی دفتر جے پی بھون میں میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے انہوں نے مہاراشٹرا میں آپریشن کمل کے مسئلہ پر جواب دیا۔ آپریشن کمل بی جے پی کا مبینہ پروگرام ہے جو کرناٹک کے سابق چیف منسٹر اور بی جے پی کے سینئر لیڈر بی ایس یدی یورپا کی ایجاد ہے جس کے تحت پارٹی حصول اقتدار کے لیے اپنی پارٹی کو مضبوط کرنے اپوزیشن کے قائدین کو خریدتی ہے۔

کماراسوامی نے کہا کہ بی جے پی کی اقتدار کی ہوس اتنی بری ہے کہ آنے والے دنوں میں اس کی وجہ سے واضح اکثریت کی حامل حکومت بھی نہیں بچے گی۔ مہاراشٹرا میں جاری سیاسی بحران پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھرپور اکثریت کے ساتھ کامیاب ہونے والی دیگر پارٹیوں کی حکومتوں کو بھی چلنے نہیں دیا جائے گا۔

 شیوسینا کی جانب سے  12باغی ارکان اسمبلی کو نااہل قرار دینے کے مطالبہ کے فوری بعد ایکناتھ شندے نے ٹوئٹر پر کہا کہ 12باغی ارکان اسمبلی کے خلاف درخواست کرکے آپ ہمیں خوفزدہ نہیں کرسکتے۔

مہاراشٹرا میں سیاسی بحران میں اس وقت شدت پیدا ہوگئی جب  شیوسینا کے مزید تین ارکان اسمبلی نے باغی گروپس میں شمولیت اختیار کی۔تاہم بی جے پی نے چہارشنبہ کو کہا کہ مہاراشٹرا کا بحران شیوسینا کا داخلی معاملہ ہے اور پارٹی کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

 کمارسوامی نے کہا کہ وہ (بی جے پی) بظاہر ارکان اسمبلی ٹھاکرے سے خوش نہیں ہیں۔ انہوں نے ارکا ن اسمبلی کا اعتماد حاصل نہیں کیا۔ مگر جو یہ پوری گندی سیاست جو کررہا ہے  وہ کوئی اور نہیں بی جے پی ہے۔ اس میں کوئی شبہ نہیں ہے۔ مجھے کرناٹک میں اس کا تجربہ ہوچکا ہے۔

انہوں نے (بی جے پی) مجھ پر اپنے ارکان اسمبلی پر اعتماد نہ کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔ انہوں نے جھوٹی مہم چلائی کہ میری حکومت میں ارکان اسمبلی کے ساتھ مناسب سلوک نہیں کیا جارہاہے۔ میں نے کانگریس کے حلقوں کی ترقی کے لیے 19 ہزار کروڑ روپئے دیے۔ میں نے پارٹی کے مقننہ لیڈر کو اس کی فہرست دی۔

 تاہم بی جے پی نے سیاسی کھیل کھیلا اور میری حکومت کو بے دخل کرنے آپریشن کمل چلایا۔ کماراسوامی نے کہا کہ مہاراشٹرا میں بی جے پی کا رویہ دستور پر داغ ہے۔ ملک میں اب دستور کا کوئی تحفظ نہیں بچا ہے۔ نصابی کتب کے بحران سے متعلق سوا ل پر کماراسوامی نے کہا کہ کانگریس نصاب کے خلاف بول رہی ہے اور بی جے پی وزیر سدارامیا حکومت پرالزام عائد کرہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سدارامیا حکومت نے غلطی کی۔

تبصرہ کریں

Back to top button