بی جے پی کے نارویکر مہاراشٹر اسمبلی کے اسپیکر منتخب

ایکناتھ شنڈے کی حکومت پیر کے دن اسمبلی میں فلورٹسٹ سے گذرے گی۔ اسمبلی میں ایک نشست خالی ہے کیونکہ شیوسینا کے رکن اسمبلی رمیش لاٹکے اس دنیا میں نہیں رہے۔

ممبئی: بی جے پی کے راہول نارویکر اتوار کے دن مہاراشٹرا اسمبلی کے اسپیکر منتخب ہوئے۔ انہیں 164 ووٹ ملے۔ انہوں نے ادھوٹھاکرے کی شیوسینا کے امیدوار راجن سالوی کو شکست دی جن کے حصہ میں 107 ووٹ آئے۔ 45 سالہ نارویکر ملک کے اسمبلی اسپیکرس میں سب سے کم عمر ہیں۔ چیف منسٹر دیویندرفڈنویس نے یہ بات بتائی۔

ان کے خسر رام راجے نائک (این سی پی) قانون سازکونسل کے صدرنشین ہیں۔ 288 رکنی مہاراشٹرا اسمبلی کا دو روزہ خصوصی اجلاس جنوبی ممبئی کے ودھان بھون میں اتوار کو 11بجے دن شروع ہوا۔ ایکناتھ شنڈے کی حکومت پیر کے دن اسمبلی میں فلورٹسٹ سے گذرے گی۔ اسمبلی میں ایک نشست خالی ہے کیونکہ شیوسینا کے رکن اسمبلی رمیش لاٹکے اس دنیا میں نہیں رہے۔

این سی پی رکن اسمبلی نرہری زیروال ووٹ نہیں ڈال سکے کیونکہ وہ ڈپٹی اسپیکر ہیں۔ ووٹوں کی گنتی کے بعد زیروال نے کہا کہ بعض شیوسینا ارکان اسمبلی نے پارٹی وہپ کے خلاف ووٹ ڈالا۔ اس کے ریکارڈنگ کی جانچ ہوگی اور ان کے خلاف ضروری کاروائی کی جانی چاہئیے۔ آج 12 ارکان اسمبلی غیرحاضر تھے۔

 ان میں 2لکشمن جگتاپ اور مکتا تلک شدید بیمار ہیں جبکہ این سی پی کے دو ارکان اسمبلی انیل دیشمکھ اور نواب ملک منی لانڈرنگ کیسس کے سلسلہ میں جیل میں بند ہیں۔ مجلس کے رکن اسمبلی مفتی محمداسماعیل نے اجلاس میں شرکت نہیں کی۔ تین ارکان اسمبلی رئیس شیخ‘ ابو عاصم اعظمی(سماج وادی پارٹی) اور شاہ فرخ (مجلس) ووٹنگ کے دوران غیرحاضر تھے۔

یہ بھی پڑھیں

کانگریس رکن اسمبلی پرنیتی شنڈے بھی غیرحاضر تھیں۔ شیوسینا قائد آدتیہ ٹھاکرے نے باغی ارکان اسمبلی کے لئے سخت سیکیوریٹی انتظامات پر ایکناتھ شنڈے حکومت کو نشانہ تنقید بنایا۔ باغی ارکان قریب میں واقع لگژری ہوٹل سے ودھان بھون میں داخل ہوئے۔ شنڈے کی تائید کرنے والے باغی ارکان ہفتہ کی شام گوا سے ممبئی لوٹے تھے اور انہیں جنوبی ممبئی کی ایک لگژری ہوٹل میں ٹہرایاگیاتھا۔

 اجلاس شروع ہونے سے قبل ایکناتھ شنڈے گروپ نے ودھان بھون میں لیجسلیٹیوپارٹی آفس مہربندکردیا۔ پارٹی دفتر کے بند دروازوں پر پلاسٹک ٹیپ سے ایک کاغذ چسپاں کیاگیا جس پر مراٹھی میں لکھاتھا کہ یہ دفتر شیوسینا لیجسلیٹیوپارٹی کی ہدایت کے مطابق بند کردیاگیا ہے۔

 شنڈے کو چھوٹی جماعتوں کے 10ارکان اسمبلی کی تائید حاصل ہے جبکہ بی جے پی کے پاس 106 ارکان اسمبلی ہیں۔ شیوسینا ارکان کی تعداد55‘ این سی پی ارکان کی تعداد 53‘کانگریس ارکان کی تعداد44‘ اور بہوجن وکاس اگھاڑی ارکان کی تعداد 3ہے۔ سماج وادی پارٹی‘ مجلس اور پرہارجن شکتی پارٹی کے پاس فی کس 2ارکان ہیں۔

 اسمبلی میں ایم این ایس‘ سی پی آئی ایم‘ پی ڈبلیوٹی‘سوابھیمان پکش‘ راشٹریہ سماج رکشا‘ جن سوریہ شکتی پارٹی‘ اور کرانتی کاری شیٹکری پارٹی کے پاس فی کس ایک رکن اسمبلی ہے۔ آزاد ارکان کی تعداد13ہے۔ این سی پی کے دو ارکان ڈپٹی چیف منسٹر اجیت پوار اور وزیرسیول سپلائز چھگن بھجبل کو کورونا ہوا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button