ترکی میں وائس آف امریکہ اور ڈچ ویلے پر پابندی

ترکی کے میڈیا واچ ڈاگ (نگراں ادارہ) نے امریکی پبلک سروس براڈکاسٹر وائس آف امریکہ اور جرمن براڈکاسٹر ڈچ ویلے کی ترک سروس تک رسائی ممنوع کردی ہے جس سے اس پر سنسرشپ کے لئے تنقید ہورہی ہے۔

استنبول: ترکی کے میڈیا واچ ڈاگ (نگراں ادارہ) نے امریکی پبلک سروس براڈکاسٹر وائس آف امریکہ اور جرمن براڈکاسٹر ڈچ ویلے کی ترک سروس تک رسائی ممنوع کردی ہے جس سے اس پر سنسرشپ کے لئے تنقید ہورہی ہے۔

سپریم بورڈ آف ریڈیو اینڈ ٹیلی ویژن نے فروری کا فیصلہ لاگو کردیا جس کی رو سے بین الاقوامی میڈیا کو ترکی میں ٹی وی مواد دکھانے کے لئے براڈ کاسٹ لائسنس لینا ضروری ہوتا ہے۔

انقرہ کی عدالت نے رولنگ دی کہ سرکاری ڈچ ویلے اور وائس آف امریکہ کی ویب سائٹس تک رسائی محدود کردی جائے۔ جمعہ کے دن ان 2 ویب سائٹس میں کوئی بھی دستیاب نہیں۔

ڈچ ویلے نے ایک بیان میں کہا کہ وہ لائسنس نہیں لے گی کیونکہ وہ حکومت ِ ترکی کو ادارتی مواد سنسر کرنے دیتی ہے۔ اس کے ڈائرکٹر جنرل نے کہا کہ ترکش ریڈیو اینڈ ٹی وی بورڈ کو ہم اس کی وضاحت تفصیل سے کرچکے ہیں۔

بورڈ میں ترک صدر رجب طیب اردغان کی برسراقتدار جماعت اور اس کے حلیفوں کا غلبہ ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button