تریپورہ: بی جے پی کے کئی ایم ایل اے کانگریس کے رابطہ میں: برجیت سنہا

برجیت نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی نے 36 ایم ایل ایز کے ساتھ حکومت بنائی، جن میں کانگریس کے 29، کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا-مارکسسٹ کے دو اور ترنمول کانگریس سے ایک شامل ہے، جب کہ اتحادی آئی پی ایف ٹی کے تمام آٹھ ایم ایل ایز کانگریس کے پس منظر سے تھے۔

اگرتلہ: تریپورہ میں حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے صدر کے عہدے کو لے کر غیر یقینی صورتحال کے درمیان ریاستی اپوزیشن کانگریس کے صدر برجیت سنہا نے منگل کو دعویٰ کیا کہ بڑی تعداد میں بی جے پی ایم ایل اے ان کے رابطے میں ہیں اور امکان ہے کہ پارٹی میں شامل ہونے کے لیے تیار ہیں۔

سنہا نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تریپورہ میں بی جے پی کانگریس کی حمایت سے ترقی کر کے 2018 میں اقتدار میں آئی جب وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کے اعلیٰ لیڈروں نے ترقی، بہترحکمرانی اور بدعنوانی سے پاک حکومت کے بڑے بڑے وعدے کیے تھے۔ پچھلے 54 مہینوں میں وہ اپنے وعدے کو پورا کرنے میں پوری طرح ناکام رہی ہے۔

انہوں نے کہا، ”بی جے پی نے نہ صرف معصوم ووٹروں کوبلکہ تریپورہ میں الیکشن جیتنے کے لیے مختلف پارٹیوں کے لیڈروں کو بھی دھوکہ دیا ہے۔ اقتدار میں آنے کے بعد سابق وزیر اعلیٰ بپلو کمار دیو نے دوسری پارٹیوں سے وابستہ لیڈروں اور کارکنوں کو گالیاں دینا شروع کر دیں۔ انہوں نے ریاست کے ترقیاتی فنڈ کو لوٹنے کے لیے ایک سرکل بنا لیا ہے اور تمام پارٹیوں کے لیڈروں کے خلاف سازش رچی ہے۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ بی جے پی نے 36 ایم ایل ایز کے ساتھ حکومت بنائی، جن میں کانگریس کے 29، کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا-مارکسسٹ کے دو اور ترنمول کانگریس سے ایک شامل ہے، جب کہ اتحادی آئی پی ایف ٹی کے تمام آٹھ ایم ایل ایز کانگریس کے پس منظر سے تھے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ان میں سے زیادہ تر ایک سال حکومت میں رہنے کے بعد مایوس ہو چکے ہیں۔

تبصرہ کریں

Back to top button