تشدد میں حکمران پارٹی کا ایک ایم پی ہلاک

سری لنکا بدترین حالات سے دوچار ہے۔ حکومت نے ایمرجنسی ڈکلیرکردی ہے اورآج وزیراعظم مہندا راجہ پکسے اپنے عہدہ سے مستعفی ہوگئے ہیں۔

کولمبو: سری لنکا بدترین حالات سے دوچار ہے۔ حکومت نے ایمرجنسی ڈکلیرکردی ہے اورآج وزیراعظم مہندا راجہ پکسے اپنے عہدہ سے مستعفی ہوگئے ہیں۔

دوسری طرف مخالف حکومت اورحکومت کے حامیوں میں جھڑپیں جاری ہیں۔ پرتشدد جھڑپوں میں حکمران پارٹی کاایک رکن پارلیمنٹ ہلاک ہوگیا۔اس کے علاوہ دیگر دوافراد کی بھی ہلاکت کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔

پولیس نے بتایاکہ سری لنکامیں حکمران جماعت سری لنکاپوڈوجنا پیرامونا (ایس ایل پی پی) کے ایک رکن پارلیمنٹ57 سالہ امرکیرتی اتھوکورالاکوضلع پولناروامیں مخالف حکومت عناصرنے گھیرلیاتھا۔

عوام کاکہنا ہے کہ رکن پارلیمنٹ کی گاڑی سے فائرنگ ہوئی تھی جس پرلوگوں نے ان کی کارالٹ دی۔ عوام کایہ بھی کہناہے کہ موقع پاکر ایم پی کارسے فرار ہوگیا اورایک قریبی عمارت میں پناہ لے لی۔

جب لوگوں نے عمارت کوگھیرلیاتو اس نے اپنے ہی ریوالورسے خود کوگولی مارلی۔ اس کے علاوہ ایک27سالہ نوجوان کی بھی فائرنگ میں موت واقع ہوئی ہے۔

اسی دوران پورے سری لنکامیں نظم و ضبط کی صورتحال حکام کے ہاتھوں سے نکل چکی ہے اورعوام حکمران جماعت کے لیڈرس کی جائیدادوں پر پرتشدد حملے کررہے ہیں۔ ان کاکہناہے کہ پرامن احتجاجیوں پر حکومت کے حامی گروپس حملے کررہے ہیں جس کے جواب میں عوام بھی مشتعل ہورہے ہیں۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button