جعلی اسناد کی تیاری و فروخت کا ریاکٹ بے نقاب : انجنی کمار

ملزمین کے قبضہ سے جملہ220 جعلی تعلیمی اسناد جن میں تلنگانہ یونیورسٹی کے بی کام کے63، آندھرا یونیورسٹی بی ٹیک کے130 اورانٹر میڈیٹ مہاراشٹرا بورڈ کے 27 جعلی اسناد شامل ہیں، کو ضبط کرلیا گیا۔

حیدرآباد: کمشنر ٹاسک فورس سنٹرل زون ٹیم نے ”کیوبز اوور سیز ایجوکیشن سرویسس پرائیوٹ لمیٹڈ“ پر جو بابو خان اسٹیٹ بشیر باغ حیدرآباد کی ساتویں منزل پر واقع ہے، دھاوا کرتے ہوئے جعلی اسناد کی تیاری وفروخت کے ریاکٹ کو بے نقاب کیا، اور اس سلسلہ میں 2 افراد کو گرفتار کرلیا۔

کمشنر پولیس حیدرآباد انجنی کمار نے ہفتہ کے روز میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ گرفتار شدگان کی شناخت 30 سالہ سید نوید عرف فیصل مالک کیوبز اوور سیز ایجوکیشن سرویسس پرائیوٹ لمیٹڈ ساکن مدینہ نگر یاقوت پورہ اور 22سالہ سید اویس علی عرف اویس پیشہ ڈی ٹی پی آپریٹر ساکن گولی پورہ کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

ملزمین کے قبضہ سے جملہ220 جعلی تعلیمی اسناد جن میں تلنگانہ یونیورسٹی کے بی کام کے63، آندھرا یونیورسٹی بی ٹیک کے130 اورانٹر میڈیٹ مہاراشٹرا بورڈ کے 27 جعلی اسناد شامل ہیں، کو ضبط کرلیا گیا۔

ملزمین کے قبضہ سے6 کمپیوٹر، ایچ پی پرنٹرس 2، اسکیان، 4لیاپ ٹاپ، انٹری رجسٹر ایک خالی، پیپرس کے 3بنڈلس ضبط کرلئے گئے۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ ملزمین تمام اقسام کے آن لائن ورکس اور ڈی ٹی پی ورک، ویزا پروسسنگ، سرٹیفکیٹ اور دستاویزات، میڈیکل فٹ نس سرٹیفکیٹس، آفر لیٹرس وغیرہ کی تیاری کرتے تھے اور فروخت کرتے ہوئے ضرورت مند سے 50ہزارتا75 ہزار روپے وصول کرتے تھے۔

ملزمین، اس سال جون سے یہ کاروبار کررہے ہیں۔ حقیقی طور پر کامیاب بی ایس سی، بی ٹیک اور انٹر کامیاب امیدواروں کے اصل اسناد کے نمبرمیں تھوڑی تبدیلی کرتے ہوئے یہ گروہ، جعلی اسناد تیار کرتا تھا۔ ملزم نوید، یونیورسٹی آف شیلر امریکہ، ٹی سائڈ یونیورسٹی، یونیورسٹی آف لا یو کے، یونیورسٹی آف کنکورڈیا، امریکہ کے اسناد کے خواہش مند امیدواروں کو فرضی اسناد بذریعہ آن لائن فراہم کرتا تھا۔

اس غیر قانونی کاروبار سے انہیں معقول آمدنی ہورہی تھی۔ ملزمین کے خلاف سیف آباد، عابڈس، مشیر آباد اور ڈچپلی (نظام آباد) میں مقدمات درج ہیں۔ ٹاسک فورس نے ضبط شدہ جعلی اسناد، دیگر اشیاء کے ساتھ ملزمین کو سیف آباد پولیس کے حوالہ کردیا۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button