جوبائیڈن ہجومی تشدد عصبی جرم قانون پر دستخط کریں گے

یہ بل عصبی جرم کے نتیجہ میں موت یا شدید جسمانی چوٹیں پہنچانے کے لئے کی جانے والی سازش کے نتیجہ میں ہجومی تشدد کا جرم سرزد ہونے پر قانونی کارروائی کی راہ ہموار کرے گا۔

واشنگٹن: صدر امریکہ جو بائیڈن نے منگل کو پہلے وفاقی قانون پر دستخط کریں گے جو ہجومی تشدد کو ایک وفاقی عصبی جرم قرار دے گا۔ یاد رہے کہ امریکی سینیٹ نے اسی ماہ بہ اتفاق آراء اس بل کو منظور کیا تھا۔ اس قانون کو 14 سالہ ایمیٹ ٹیل سے منسوب کیا گیا ہے جس کا 1955 ء میں مسیسپی میں ایک نسلی حملہ میں بہیمانہ قتل کردیا گیا تھا۔

 اس واقعہ نے امریکہ میں افریقی امریکیوں کے خلاف مظالم اور تشدد کی جانب سارے امریکہ کی توجہ کھینچ لی تھی اور اس کے خلاف شہری حقوق کی ایک مہم چھڑ گئی تھی۔ یہ بل عصبی جرم کے نتیجہ میں موت یا شدید جسمانی چوٹیں پہنچانے کے لئے کی جانے والی سازش کے نتیجہ میں ہجومی تشدد کا جرم سرزد ہونے پر قانونی کارروائی کی راہ ہموار کرے گا۔

 ہجومی تشدد کو غیر قانونی قرار دینے کی زائد از 200 کوششوں کے بعد بالآخر کانگریس نے امیٹ ٹیل اینٹی لنچنگ ایکٹ منظور کرنے میں کامیاب ہوگئی۔ اس بل کو ایوان نمائندگان نے 422-3 کے ووٹوں سے منظور کیا تھا۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button