جہانگیر پوری تشدد، مزید 3 افراد گرفتار

آج جن تین افراد کو گرفتار کیا گیا اُن میں 35 سالہ محمد فرید عرف نیتو بھی شامل ہے جو اس کیس میں شدت سے مطلوب تھا۔ اُسے مغربی بنگال کے مشرقی مدنا پور میں اُس کے ایک رشتہ دار کے مکان سے گرفتار کیا گیا۔

نئی دہلی: دہلی پولیس نے جہانگیر پوری تشدد کے سلسلہ میں مزید 3 افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔ اس میں ایک مبینہ کلیدی سازشی بھی شامل ہے جسے مغربی بنگال سے گرفتار کیا گیا۔ جہانگیر پوری تشدد کے سلسلہ میں گرفتار شدگان کی تعداد 30 تک پہنچ گئی ہے۔ اِن میں 3نابالغ بھی شامل ہیں۔

آج جن تین افراد کو گرفتار کیا گیا اُن میں 35 سالہ محمد فرید عرف نیتو بھی شامل ہے جو اس کیس میں شدت سے مطلوب تھا۔ اُسے مغربی بنگال کے مشرقی مدنا پور میں اُس کے ایک رشتہ دار کے مکان سے گرفتار کیا گیا۔

دیگر 2 افراد کو جہانگیرپوری سے ہی گرفتار کیا گیا ہے جن کی 34سالہ جعفر اور 43 سالہ بابا الدین عرف بابو کی حیثیت سے شناخت کی گئی ہے۔ دونوں سگے بھائی بتائے جاتے ہیں۔

جہانگیر پوری تشدد کی تحقیقات دہلی پولیس کی کرائم برانچ کررہی ہے۔ پولیس نے بتایاکہ دونوں بھائی اِس علاقہ میں بریانی کی ہوٹل چلاتے تھے۔

سی سی ٹی فوٹیج میں واضح طورپر دیکھا جاسکتا ہے کہ فرید نے اپنے ایک ساتھی محمد انصار کے ہمراہ تشدد بھڑکانے کیلئے کاسی سرگرم اور جارحانہ رول ادا کیا۔ اُس نے فائرنگ کی یا نہیں، یہ معاملہ تحقیقات میں دیکھا جائے گا۔ اسپیشل سل اور آئی ایف ایس او یونٹ کے تعاون سے کرائم برانچ جہانگیر پوری تشدد کی تحقیقات کررہا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button