حکم عدولی پر بی بی ایم پی کمشنر کو ہائی کورٹ کا سمن

عدالت خاطی عہدیداروں کو جیل بھیجنے سمیت سخت احکامات کی اجرائی سے بھی گریز نہیں کرے گی۔6/ مارچ2020کو عدالت نے حکم دیا تھاکہ اگر کرناٹک ریاستی آلودگی کنٹرول بورڈ (کے ایس پی سی بی) کو اندرون تین ہفتے اختیارات نہیں ملے تو شمال مشرقی بنگلورو کے مٹاگناہلی کان کے مقام پر ٹھوس کچرا ڈالنا بند کردیا جائے۔

بنگلورو: ہائی کورٹ نے بی بی ایم پی کمشنر کو عدالت میں حاضر ہو کر احکامات کے باوجود ملا جلا ٹھوس کچرا مٹاگناہلی میں ڈالنے کے لیے جواب دینے کی ہدایت دی۔ چیف جسٹس ریتو راج اوستھی کی ڈیویژن بنچ نے کہا کہ عدالت کی حکم عدولی قبول نہیں کی جائے گی۔

عدالت خاطی عہدیداروں کو جیل بھیجنے سمیت سخت احکامات کی اجرائی سے بھی گریز نہیں کرے گی۔6/ مارچ2020کو عدالت نے حکم دیا تھاکہ اگر کرناٹک ریاستی آلودگی کنٹرول بورڈ (کے ایس پی سی بی) کو اندرون تین ہفتے اختیارات نہیں ملے تو شمال مشرقی بنگلورو کے مٹاگناہلی کان کے مقام پر ٹھوس کچرا ڈالنا بند کردیا جائے۔

 یہ احکام مفاد عامہ کی عرضی پر صادر کیا گیا تھا جو2012میں میونسپل سالڈ ویسٹ (مینجمنٹ اینڈ ہینڈلنگ) رولس2000اور سالڈ ویسٹ مینجمنٹ رولس (2016) پر عمل آوری میں ناکامی پر داخل کی گئی تھی۔ حالیہ سماعت کے دوران عرضی گزاروں نے عدالت کو اطلاع دی کہ ملا جلا کچرا اس مقام پر اب بھی ڈالا جارہا ہے۔

 حالانہ کے ایس پی سی بی کے وکیل کا کہنا ہے کہ ابھی تک کوئی اختیارات جاری نہیں کیے گئے۔ ریاستی آلودگی کنٹرول بورڈ کے وکیل نے عدالت کو اطلاع دی کہ آلودگی کنٹرول بورڈ نے اس ضمن میں کوئی اختیارات فراہم نہیں کیے ہیں۔“

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button