افغانستان دوبارہ دہشت گردوں کی پناہ گاہ نہ بنے: آسٹریلیا

آسٹریلیائی وزیر خارجہ ماریس پینے اور آسٹریلیائی وزیر دفاع پیٹر دتتان نے اپنے ہندوستانی ہم منصب ایس جئے شنکر اور راجناتھ سنگھ کے ساتھ 2پلس 2مذاکرات کے بعد مودی سے ملاقات کی ہے۔

نئی دہلی: آسٹریلیا کے وزراء خارجہ اور دفاع نے آج وزیراعظم نریندرمودی سے ملاقات کی اور دونوں ملکوں نے اصولوں پر مبنی بین الاقوامی نظم اور ایک کھلے و شمولیتی ہند۔ بحرالکاہل  کے مشترکہ عہد پر تبادلہ خیال کیا۔

آسٹریلیائی وزیر خارجہ ماریس پینے نے کہا کہ اس ملاقات میں مشترکہ عہد پر بات چیت کی گئی ہے۔

آسٹریلیائی وزیر خارجہ ماریس پینے اور آسٹریلیائی وزیر دفاع پیٹر دتتان نے اپنے ہندوستانی ہم منصب ایس جئے شنکر اور راجناتھ سنگھ کے ساتھ 2پلس 2مذاکرات کے بعد مودی سے ملاقات کی ہے۔

اس بات چیت میں دونوں ملکوں نے علاقہ میں جہاں چین کا اثر رسوخ بڑھ رہا ہے ایک آزاد، کھلے اور شمولیتی ہند بحرالکاہل کی سمت کام کرنے کا عزم ظاہر کیا ہے۔ 

وزیراعظم نریندرمودی نے ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان 2+2 مذاکرات کو انتہائی ثمر آور قرار دیا اور اپنے ہم منصب اسکاٹ موریسن کا دونوں ممالک کے درمیان جامع دفاعی اشتراک پر توجہ مرکوز کرنے کیلئے شکریہ ادا کیا ہے۔

 2+2 مذاکرات کے بعد  بھارتی وزیر خارجہ جئے شنکر نے کہا کہ یہ بات چیت دونوں فریقین کے درمیان باہمی تعلقات بالخصوص دفاعی اور سلامتی کے شعبوں میں  تعلقات کی عکاسی کرتی ہے۔

جئے شنکر نے کہا کہ افغانستان کو دوبارہ پھر کبھی دہشت گردوں کی افزائش اور تربیت کی محفوظ پناہ گزہ نہیں بننا چاہئے۔

ہندوستان اور آسٹریلیا نے کہا ہے کہ وہ نائن الیون دہشت گرد حملوں کی 20 ویں برسی پر دنیا کے ساتھ شامل ہوتے ہیں۔ یو این آئی کے بموجب ہندوستان اور آسٹریلیا نے ہفتہ کے دن فیصلہ کیا کہ باہمی دفاعی تعاون بڑھایا جائے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.