”باپ کی مسجد“ ریمارک پر تنازعہ

اسدالدین اویسی نے یوگی آدتیہ ناتھ کی زیر قیادت حکومت سے سوال کیا کہ بارہ بنکی۔ ایودھیا سرحد پر رام سنیہی گھاٹ تحصیل میں مسجد کو کیوں مسمار کیا گیا۔اس حوالہ سے انہوں نے ”باپ کی مسجد“ کا ریمارک کیا جس پر بعض گوشوں سے تنقید کی جارہی ہے۔

بارہ بنکی: وزیراعظم نریندرمودی کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کل ہند مجلس اتحاد المسلمین کے صدر اسدالدین اویسی نے کہا کہ 7 سال پہلے ان کے اقتدار میں آنے کے بعد سے ملک کو ہندوراشٹر میں تبدیل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

انہوں نے یوگی آدتیہ ناتھ کی زیر قیادت حکومت سے سوال کیا کہ بارہ بنکی۔ ایودھیا سرحد پر رام سنیہی گھاٹ تحصیل میں مسجد کو کیوں مسمار کیا گیا۔

اس حوالہ سے انہوں نے ”باپ کی مسجد“ کا ریمارک کیا جس پر بعض گوشوں سے تنقید کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اترپردیش کے چیف منسٹر نے مسجد کو اس وقت شہید کیا جب  ریاست میں انہیں تبدیل کرنے کی بات چل رہی تھی۔

تین طلاق قانون کا حوالہ دیتے ہوئے حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ نے ہندو خواتین کی حالت زار کا ذکر کیا اور وزیراعظم مودی پر نشانہ سادھا۔

صدرمجلس نے محمد اخلاق کے قتل کا ذکر کیا جنہیں 2015 میں دادری کے قریب ایک موضع میں گائے ذبح کرنے کے شبہ پر ہجوم کی جانب سے پیٹ پیٹ کر قتل کردیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اس طرح کے واقعات مودی کی وجہ سے پیش آرہے ہیں جو وزیراعظم ہیں اور بی جے پی حکومت اس طرح کے عناصر کی مدد کررہی ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.