مجھے گھر پر نظربند کردیا گیا : محبوبہ مفتی

مفتی نے دعویٰ کیا کہ ان کو گھر پر نظر بند کردیا گیا تھا تاکہ انہیں ایک مسلم شخص کے خاندان سے جس کو جمعرات کے دن ضلع اننت ناک میں سی آر پی ایف نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ملاقات سے روکا جاسکے۔

سری نگر۔: صدر پی ڈی پی محبوبہ مفتی نے آج کہاں کہ جموں وکشمیر کی صورتحال بدسے بدتر ہوگئی ہے اور الزام عائد کیا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے سیاسی فوائد حاصل کرنے کی خاطر ”طاقت کا استعمال کرنے کی پالیسی“ کا استعمال کیا جارہا ہے۔

مفتی نے دعویٰ کیا کہ ان کو گھر پر نظر بند کردیا گیا تھا تاکہ انہیں ایک مسلم شخص کے خاندان سے جس کو جمعرات کے دن ضلع اننت ناک میں سی آر پی ایف نے گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ملاقات سے روکا جاسکے۔

محبوبہ نے ٹوئیٹر پر تحریر کیا ”جموں وکشمیر کی صورتحال بد سے بدتر ہوگئی ہے۔ مجھے اس حقیقت کو دیکھ کر اندیشے پیدا ہوگئے ہیں کہ اصلاح کرنے کی بجائے حکومت ہند نے طاقت کا استعمال کرنے کی پالیسی کا سلسلہ برقرار رکھا ہے تاکہ انتخابات میں سیاسی فوائد حاصل کئے جاسکیں۔ ان کا اشارہ مجوزہ یوپی انتخابات کی طرف ہے“۔

انہوں نے وضاحت کی ”آج ان کو کافی دیر تک گھر پر نظر بند کردیا گیا وہ سی آرپی ایف کی جانب سے گولی مار کر ہلاک کردیئے جانے والے ایک معصوم و بے قصور شہری کے خاندان سے ملاقات کرنا چاہتی تھیں۔ حکومت ہند چاہتی ہیں کہ ہم ہلاکتوں کی منتخبہ طور پر مذمت کریں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.