کشمیر میں مزید تحدیدات‘ جنرل راوت کے بیان پر محبوبہ مفتی کی تنقید

محبوبہ مفتی نے ٹویٹر پر کہا کہ کشمیر کو کھلی جیل میں بدل دینے کے بعد بھی بپن راوت کا یہ کہنا‘ حیرت کی بات نہیں کیونکہ جموں وکشمیر کی صورتحال سے نمٹنے مرکز کا واحد طریقہ کار دبانا کچلنا ہے۔

سرینگر: پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے ا توار کے دن الزام عائد کیا کہ ”دبانا“ جموں وکشمیر کی صورتحال سے نمٹنے کا مرکز کا واحد طریقہ کار ہے۔ چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت کے ریمارکس کے حوالہ سے کہ کشمیر میں حالیہ تشدد سے نمٹنے مزید پابندیاں عائد کی جائیں گی محبوبہ مفتی نے کہا کہ یہ بیان‘ وادی میں سب کچھ ٹھیک ہونے کے سرکاری بیانیہ سے ٹکراتا ہے۔

 سابق چیف منسٹر جموں وکشمیر نے ٹویٹر پر کہا کہ کشمیر کو کھلی جیل میں بدل دینے کے بعد بھی بپن راوت کا یہ کہنا‘ حیرت کی بات نہیں کیونکہ جموں وکشمیر کی صورتحال سے نمٹنے مرکز کا واحد طریقہ کار دبانا کچلنا ہے۔ آسام میں ہفتہ کے دن روی کانت سنگھ میموریل لکچر دیتے ہوئے جنرل راوت نے کہا تھا کہ جموں وکشمیر کے لوگوں کو نقل وحرکت کی جو آزادی ملنے لگی ہے وہ حالیہ صورتحال کی وجہ سے متاثر ہوسکتی ہے۔

انہوں نے صورتحال سے نمٹنے میں عوام سے تعاون مانگا۔ پی ڈی پی قائد نے اظہار حیرت کیا کہ اجتماعی گرفتاریاں‘ انٹرنٹ سرویس کی معطلی اور نئے سکیوریٹی بنکرس لگانے جیسے سخت اقدامات کے بعد مزید کوئی اقدامات رہ گئے ہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.