اب یوپی حکومت کو اجئے مشرا کا استعفیٰ لینا چاہئے: رندیپ سرجے والا

اجے مشرا کے بیٹے آشیش مشرا کو بچانے کیلئے ضلعی عدالت میں ان کے وکلاء کے کئی دلائل کے باوجود ان کے جرائم بے نقاب ہو چکے ہیں، اس لئے وزیر اعظم نریندر مودی کو فوری طور پر مرکزی وزیر کو وزیر کے عہدہ سے ہٹا دینا چاہیے۔

نئی دہلی: کانگریس نے کہا ہے کہ اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری میں گزشتہ اکتوبر کو احتجاج کرنے والے کسانوں کو کچلنے کے الزام میں گرفتار مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا کے بیٹے آشیش مشرا کو بچانے کیلئے ضلعی عدالت میں ان کے وکلاء کے کئی دلائل کے باوجود ان کے جرائم بے نقاب ہو چکے ہیں، اس لیے وزیر اعظم نریندر مودی کو فوری طور پر مرکزی وزیر کو وزیر کے عہدے سے ہٹا دینا چاہیے۔

کانگریس کے مواصلات کا شعبہ کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجیوالا نے ٹویٹ کیا ’’اب تو سچ سامنے ہے۔ اب ملک کے وزیر مملکت برائے داخلہ استعفیٰ کیوں نہیں۔ اب کیا وزیر کی کرسی کسان کی جان سے زیادہ قیمتی ہے؟ اب وزیراعظم انہیں کیوں بچا رہے ہیں؟ ملک جواب مانگتا ہے‘‘۔

اس کے ساتھ ہی انہوں نے ایک خبر پوسٹ کی ہے جس میں لکھا ہے ’’ 3 اکتوبر کو 2.30 سے ​​3.30 بجے تک کہاں تھا ثابت نہیں کر سکا آشیش مشرا۔ مدعا علیہ کے لوگوں نے عدالت کو بتایا کہ 60 لوگوں نے انہیں جائے وقوعہ پر دیکھا تھا۔

دریں اثنا، سپریم کورٹ نے آج لکھیم پور کھیری قتل کیس کی خصوصی تفتیشی ٹیم-ایس آئی ٹی کی جانچ کی نگرانی کے لیے پنجاب اور ہریانہ ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ جسٹس راکیش کمار جین کو مقرر کیا۔ اس واقعہ کے سلسلے میں کسانوں کا الزام ہے کہ جس کار سے چار لوگ کچلا گیا اس میں مشرا کا بیٹا آشیش مشرا کار بیٹھا تھا اور کسانوں کو جان بوجھ کر کچلا گیا تھا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.