اعظم خاں، مختار انصاری اور عتیق احمد کیخلاف ای ڈی کی پوچھ تاچھ شروع

مرکزی ایجنسی قانون پی ایم ایل اے کی خصوصی عدالتوں سے اجازت حاصل کرنے کے بعد یہ پوچھ تاچھ شروع کی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ اترپردیش کی سیتا پور ڈسٹرکٹ جیل میں قید 72 سالہ اعظم خاں سے 20 تا 24 ستمبر پوچھ تاچھ کے دوران بیان قلمبند کیا جائے گا۔

نئی دہلی: سماج وادی پارٹی کے رکن پارلیمان اعظم خاں سرغنہ مختار انصاری اور دبدبہ رکھنے والے عتیق احمد اور ان کے شرکاء کے خلاف کالے دھن کو سفید بنانے کے علیحدہ کیسوں میں انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ (ای ڈی) آج سے پوچھ تاچھ شروع کی۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مرکزی ایجنسی قانون پی ایم ایل اے کی خصوصی عدالتوں سے اجازت حاصل کرنے کے بعد یہ پوچھ تاچھ شروع کی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ اترپردیش کی سیتا پور ڈسٹرکٹ جیل میں قید 72 سالہ اعظم خاں سے 20 تا 24 ستمبر پوچھ تاچھ کے دوران بیان قلمبند کیا جائے گا۔ اسی طرح اسمبلی حلقہ مؤ کے بی ایس پی کے 58 سالہ رکن اسمبلی انصاری جو پی ایم ایل اے کے تحت یوپی کی باندہ ڈسٹرکٹ جیل میں قید ہیں سے پوچھ تاچھ کی جائے گی اور اگست میں جاری کردہ حکم کے مطابق ان کا بیان قلمبند کیا جائے گا۔

 پی ایم ایل اے کے تحت خصوصی عدالت کی جانب سے ان ہی خطوط میں جاری کردہ حکم کے مطابق 59 سالہ عتیق احمد جو گجرات کی سابرمتی جیل میں عدالتی تحویل میں ہیں سے پوچھ تاچھ کی جائے گی اور ان کا بیان قلمبند کیا جائے گا۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ ایجنسی نے ان کے خلاف علیحدہ پی ایم ایل اے کیس درج کیا ہے اور کہا کہ اسی قانون کے فوجداری دفعات کی تحت ان کی املاک قرق کی جائیں گی۔

 ای ڈی نے 2019ء میں ریاستی پولیس کی جانب سے درج کردہ کم از کم 26 ایف آئی آر کی بنیاد پر تحقیقات شروع کی۔ اعظم خان چیف منسٹر اکھلیش یادو کی زیرقیادت ایس پی حکومت میں وزیر شہری ترقیات تھے۔ مختار انصاری کے خلاف درج کردہ کم از کم 49 فوجداری کیسوں کی تحقیقات ای ڈی کی جانب سے کی جارہی ہے۔ عتیق احمد جو سابق رکن پارلیمنٹ ہیں ماضی میں سماج وادی پارٹی اور اپنا دل (سونیوال) سے وابستہ رہے اور ان کے خلاف 196 ایف آئی آر درج ہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.