افغانستان کی صورتحال‘ عالمی برادری سے بات چیت جاری: ایس جئے شنکر

ڈاکٹر جئے شنکر نے آج تمام اپوزیشن جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں کو پارلیمنٹ ہاؤز کے انیکسی میں افغانستان کی صورت ِحال کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔

نئی دہلی:وزیر خارجہ ڈاکٹر ایس جئے شنکر نے جمعرات کے دن بتایا کہ ہندوستان‘افغانستان کی صورتِ حال کے حوالہ سے عالمی برادری کے ساتھ مسلسل بات چیت کر رہا ہے لیکن اب پہلی ترجیح یہ ہے کہ باقی ہندوستانی شہریوں کو وہاں سے واپس لایا جائے۔

ڈاکٹر جئے شنکر نے آج تمام اپوزیشن جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں کو پارلیمنٹ ہاؤز کے انیکسی میں افغانستان کی صورت ِحال کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔

اس کے بعد جئے شنکر نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ حکومت کی توجہ لوگوں کو وہاں سے لانے پر ہے۔ حکومت‘افغانستان سے تمام ہندوستانی شہریوں کو جلد سے جلد واپس لانے کے لیے پرعزم ہے۔

اس کے لیے دیوی شکتی آپریشن کے تحت 6 پروازیں چلائی گئی ہیں جن میں بیشتر ہندوستانیوں کو واپس لایا گیا ہے لیکن کچھ ابھی تک وہیں ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت یقینی طور پر سب کو واپس لائے گی۔

کچھ افغان شہریوں کو ہندوستانی پروازوں میں بھی لایا گیا ہے۔انہوں نے بتایا کہ اس کے ساتھ ساتھ حکومت افغانستان کے حوالہ سے بین الاقوامی سطح پر ہونے والی سرگرمیوں اور فیصلوں پر بھی نظر رکھے ہوئے ہے اور ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے کہ ان سرگرمیوں اور فیصلوں میں ہندوستان کا کردار کے لئے جگہ ہو۔

انہوں نے بتایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے اس سلسلہ میں جرمن چانسلر انجیلا مرکل اور روسی صدر ولادیمیر پوٹین کے ساتھ ٹیلی فونک بات چیت کی ہے۔ وزیر خارجہ نے کہا کہ انہوں نے کئی رہنماؤں سے بھی بات کی ہے اور یہ سلسلہ جاری رہے گا۔

ڈاکٹر جئے شنکر نے کہا کہ وہ خود اور سکریٹری خارجہ نے اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کو افغانستان کی صورت ِحال پر بریفنگ دی۔ اپوزیشن رہنماؤں نے بھی اپنا نقطہ نظر پیش کیا جو بنیادی طور پر وہاں سے لوگوں کو واپس لانے کے بارے میں تھا۔

اپوزیشن لیڈروں کے ہر سوال کا حکومت نے تسلی بخش جواب دیا۔ڈاکٹرایس جئے شنکر نے بتایا کہ حکومت کے ساتھ ساتھ تمام اپوزیشن جماعتیں بھی یہ پیغام دینا چاہتی ہیں کہ افغانستان کے حساس موضوع پر ہمارے خیالات ایک جیسے ہیں۔

ساتھ ہی یہ پیغام بھی دینا ہے کہ افغانستان کے معاملہ میں ہمارا مضبوط قومی موقف ہے اور افغانستان کے لوگوں کے ساتھ دوستی ہمارے لیے اہم ہے۔بعد ازاں ڈاکٹر جئے شنکر نے ٹویٹ کیا کہ اپوزیشن جماعتوں کے پارلیمانی لیڈروں کو آج افغانستان کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا۔

اجلاس میں شریک اپوزیشن قائدین نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے شرد پوار‘ جنتا دل (ایس) کے ایچ ڈی دیوے گوڑا‘ اے آئی ایم آئی ایم کے اسد الدین اویسی‘ بہوجن سماج پارٹی کے رتیش پانڈے‘ لوک جن شکتی پارٹی کے پشوپتی کمار پارس‘ راشٹریہ جنتا دل کے پریم چند گپتا‘کانگریس کے ملیکارجن کھڑگے اور ادھیر رنجن چودھری‘ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے وننے وشوام‘ آر ایس پی کے این کے پریم چندرن‘ ٹی ڈی پی کے جے دیو گالا‘ بیجو جنتا دل کے پرسنا آچاریہ‘جے ڈی یو کے للن سنگھ‘ ترنمول کانگریس کے سوگت رائے اور سکھیندو شیکھر رائے‘ اے آئی اے ڈی ایم کے کے نونت کرشنن اور ڈی ایم کے کے تروچی شیوا نمایاں ہیں۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.