بی جے پی ارکان کا احتجاج، زخم پر نمک چھڑکنے کے مترادف: ششی تھرور

تھرور نے کہا کہ بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے غیر ضروری اشتعال انگیزی کی گئی اور زخم پر نمک چھڑکا گیا۔ان کی جانب سے یکجہتی کا اظہار کیا جانا چاہئے تھا۔

نئی دہلی: 12اپوزیشن ارکان پارلیمنٹ کی معطلی پر تنقید کرتے ہوئے کانگریس لیڈر ششی تھرور نے آج کہا کہ حکمران پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے احتجاج زخم پر نمک چھڑکنے کے مترادف ہے۔تھرور نے کہا کہ بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے غیر ضروری اشتعال انگیزی کی گئی اور زخم پر نمک چھڑکا گیا۔ان کی جانب سے یکجہتی کا اظہار کیا جانا چاہئے تھا۔ان کی ساتھیوں کو نا منصفانہ طورپر معطل کیاگیا جو ایک قسم کا ادارہ جاتی تعطل ہے۔

بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ نے آج صبح اپوزیشن پارٹیوں کے  ارکان کے بے ہنگم رویہ کے خلاف ایوان میں احتجاج کیا۔دوسری طرف اپوزیشن کے ارکان پارلیمنٹ راجیہ سبھا کے12ارکان کے معطلی کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔پیر کے دن سے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس کے آغاز سے ہی ایوان کی کاروائی مسلسل درہم برہم ہورہی ہے۔ایک اقدام جس سے اپوزیشن میں برہمی پیدا ہوئی اورحکمراں اور اپوزیشن دونوں جانب سے ایک دوسرے پر تنقیدوں کا تبادلہ کیا گیا۔حکومت کی جانب سے ایک تحریک پیش کرتے ہوئے اجلاس کے پہلے ہی دن راجیہ سبھا کے ارکان کو معطل کیا گیا۔

اگست کے مہینہ میں منعقدہ مانسون اجلاس کے اختتام پر بھی اپوزیشن ارکان کو ایوان کی درمیانی حصہ سے نکالنے کیلئے مارشلوں کو طلب کیا گیا تھا اور ارکان کومعطل کیا گیا تھا۔معطل کردہ ارکان میں کانگریس کے6،ترنمول کانگریس اور شیوسینا کے2-2،سی پی آئی اور سی پی ایم کے ایک ایک رکن شامل ہیں جو بالترتیب پھولو دیوی نیتم،چھایاورما،رپل مورا،راج منی پٹیل،سید ناصر اور اکھلیش پرساد سنگھ (کانگریس)،ڈولاسین،شانتا چھتری، (ترنمول کانگریس)،پرینکا چترویدی،انیل دیسائی(شیوسینا)،الامارم ای کریم(سی پی ایم) اور وناوشوم (سی پی آئی)ہیں۔سرمائی اجلاس توقع ہے کہ 23دسمبر کو اختتام پذیر ہوگا۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.