’جاسوسی سافٹ ویر پیگاسس کی خریدار یقیناً حکومتِ ہند ہی ہے‘: چدمبرم

چدمبرم نے اپنے ٹوئٹر پیام میں تحریر کیا کہ پیگاسس تنازعہ میں سپریم کورٹ کے دانشمندانہ و بے باک حکم کے بعد پہلا ڈھانچہ ڈھا گیا ہے۔

نئی دہلی: سینئر کانگریس لیڈر پی چدمبرم نے پیگاسس جاسوسی معاملہ پر اسرائیلی سفیر کے ریمارک کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ این ایس یوجیسی کمپنیوں کو غیرسرکاری اداروں کو اس کی تیار کردہ اشیاء کی فروخت کا ان کا ملک اجازت نہیں دیتا۔

انھوں نے مرکزی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ہندوستان کے معاملے میں خریدار یقیناً حکومت ہند ہی ہے۔

سپریم کورٹ کی جانب سے چہارشنبہ کے دن یہ کہتے ہوئے کہ حکومت ہر بار قومی سلامتی کا سوال اٹھاتے ہوئے مفت کا پاس حاصل نہیں کرسکتی اور صرف اس مسئلہ کو پیش کرتے ہوئے عدلیہ کو خاموش تماشائی نہیں بنایا جاسکتا۔

ہندوستان میں جاسوسی کا نشانہ بنانے اسرائیلی جاسوسی سافٹ ویئر پیگاسس کے مبینہ استعمال کی تحقیقات کرنے ماہرین کی سہ رکنی کمیٹی تشکیل دی۔

چدمبرم نے اپنے ٹوئٹر پیام میں تحریر کیا کہ پیگاسس تنازعہ میں سپریم کورٹ کے دانشمندانہ و بے باک حکم کے بعد پہلا ڈھانچہ ڈھا گیا ہے۔

اسرائیلی سفیر نے کل کھلے عام بیان دیا کہ پیگاسس سافٹ ویئر صرف حکومت کو ہی فروخت کیا جاتا ہے، لہٰذا ہندوستان کے معاملہ میں خریدار یقیناً حکومت ہند ہی ہے۔

انہوں نے سوال کیا کہ کیا وزیر فاصلاتی مواصلات اعتراف کریں گے کہ حکومت ِ ہند ہی پیگاسس کی خریدار ہے۔ چدمبرم نے کہا کہ اگر وہ خاموش رہیں گے تو ان کا رپورٹ کارڈ داغدار ہوگا۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.