دہلی میں اومیکرون کا پہلا کیس

سیتندرجین نے کہا کہ ماسک،، کووڈ کی تمام اشکال سے چاہے وہ الفا‘ بیٹا‘ ڈیلٹا یا اومیکرون جو بھی ہے 99 فیصد بچاسکتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ جنوری۔ فروری میں ملک میں کووڈ 19کی تیزلہرآسکتی ہے۔ سبھی ماسک لگائیں تو اسے ٹالاجاسکتا ہے۔

نئی دہلی: تنزانیہ سے دہلی پہنچنے والے ایک 37 سالہ شخص کی اومیکرون رپورٹ پازیٹیوآئی ہے۔ یہ قومی دارالحکومت میں کووڈ19 کی نئی شکل کا پہلا کیس ہے۔ مریض فی الحال لوک نائک جئے پرکاش نارائن(ایل این جے پی) ہاسپٹل میں شریک ہے۔ علامات معمولی ہیں۔ دہلی کے وزیر صحت ستیندرجین نے بتایاکہ تاحال 17کووڈ19مریضوں اور ان سے ملنے والے 6افراد کو ایل این جے پی میں شریک کردیاگیا ہے۔

جینوم سیکونسنگ کیلئے بھیجے گئے 12 سیمپلس میں ایک میں اومیکرون ویرینٹ پایاگیا۔ مریض ہندوستانی ہے اور تنزانیہ سے لوٹا ہے۔ اس گلے میں خراش، بخار اور جسمانی درد کی ہلکی علامات کے ساتھ 2 دسمبر کو دواخانہ میں شریک کردیاگیاتھا۔ دہلی کے وزیر صحت نے کہا کہ بین الاقوامی پروازوں پر پابندی اومیکرون کا پھیلاؤ روکنے کا نہایت موثر راستہ ہے۔ سیتندرجین نے کہا کہ ماسک،، کووڈ کی تمام اشکال سے چاہے وہ الفا‘ بیٹا‘ ڈیلٹا یا اومیکرون جو بھی ہے 99 فیصد بچاسکتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ جنوری۔ فروری میں ملک میں کووڈ 19کی تیزلہرآسکتی ہے۔ سبھی ماسک لگائیں تو اسے ٹالاجاسکتا ہے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.