دہلی میں اومیکرون کے مشتبہ مریضوں کی تعداد 37 ہوگئی

دہلی میں کووِڈ کی صورتِ حال کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ یومیہ 50 تا 60 کیسس کی اطلاع دی جارہی ہے۔ بہرحال مثبت ہونے کی شرح تقریباً 0.1 فیصد ہے۔

نئی دہلی: دہلی کے سرکاری زیرانتظام لوک نائک جئے پرکاش نارائن ہاسپٹل میں اب تک قومی دارالحکومت کے جملہ 37 امیکرون ویرینٹ کے مشتبہ متاثرین کو شریک کرایا گیا ہے۔ ان کے منجملہ 28 افراد میں کووِڈ 19 کی توثیق ہوئی ہے۔ دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے آج کہا کہ اومیکرون سے متاثرہ خطوں سے آنے والے تمام مسافرین کا ایئرپورٹ پر معائنہ کیا جارہا ہے۔ اب تک 37 افراد کو ایل این جے پی میں شریک کرایا گیا ہے، جن کے منجملہ 28 میں کورونا کی توثیق ہوئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تمام 28 نمونوں کو جینوم سکوینسنگ کے لیے بھیجا گیا ہے۔

 17 رپورٹیں موصول ہوچکی ہیں، جن کے منجملہ صرف ایک شخص اومیکرون ویرینٹ سے متاثر پایا گیا ہے۔ دیگر افراد صرف کووِڈ سے متاثر ہیں، اومیکرون سے نہیں۔ دہلی میں کووِڈ کی صورتِ حال کے بارے میں انہوں نے بتایا کہ یومیہ 50 تا 60 کیسس کی اطلاع دی جارہی ہے۔ بہرحال مثبت ہونے کی شرح تقریباً 0.1 فیصد ہے۔ اگر اس شرح میں 0.5 فیصد کا بھی اضافہ ہوتا ہے تو ہم شہر میں مرحلہ وار ردّ عمل پروگرام شروع کریں گے۔ ستیندر جین نے مرکز سے اپیل کی کہ وہ صحت خدمات کے بلارکاوٹ جاری رہنے کے لیے احتجاجی ریسیڈنٹ ڈاکٹرس کے مطالبات کو قبول کرے۔

انہوں نے کہا کہ ہم کووِڈ کی تیسری لہر آنے پر اس سے نمٹنے کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔ بستروں، آکسیجن اور دواؤں کی کوئی قلت محسوس نہیں کی جائے گی، تاہم میں عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ وہ ماسک کا استعمال جاری رکھیں۔ ہم کووِڈ سے متعلق پروٹوکول پر عمل کرتے ہوئے تیسری لہر کو روک سکتے ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.