دہلی میں فضائی آلودگی کا مسئلہ، سپریم کورٹ۔ سرکاری عہدیداروں پر برہم

۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ بدبختی کی بات ہے کہ بیوروکریسی(دفتر شاہی) کی حالت ایسی ہوگئی ہے۔ اس نے مرکز اور ریاستوں سے کہا کہ وہ کل کی ایمرجنسی میٹنگ میں کئے گئے فیصلوں کو من و عن روبہ عمل لائیں۔

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے چہارشنبہ کے دن بیوروکریٹس پر جم کر تنقید کی کہ انہوں نے کسی بھی صورتِ حال بشمول فضائی آلودگی سے نمٹنے میں ”کوئی بھی قدم نہ اٹھانے“ کا رویہ اختیار کررکھا ہے۔ چیف جسٹس این وی رمنا‘ جسٹس سوریہ کانت اورجسٹس ڈی وائی چندرچوڑپر مشتمل سہ رکنی بنچ نے کہا کہ سرکاری عہدیدار کوئی فیصلہ کرنا نہیں چاہتے۔ وہ چاہتے ہیں کہ عدالتیں احکام جاری کریں جن کی تعمیر وہ بخوشی کردیں گے۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ بدبختی کی بات ہے کہ بیوروکریسی(دفتر شاہی) کی حالت ایسی ہوگئی ہے۔۔ اس نے مرکز اور ریاستوں سے کہا کہ وہ کل کی ایمرجنسی میٹنگ میں کئے گئے فیصلوں کو من و عن روبہ عمل لائیں۔

 سپریم کورٹ نے معاملہ کی آئندہ سماعت چہارشنبہ 24  نومبر کو مقرر کی۔ حکومت پنجاب نے اپنے حلف نامہ میں سپریم کورٹ سے کہا کہ وہ پرالی جالانے پر کنٹرول کے لئے مرکز سے کسانوں کے لئے فی کنٹل 100 روپے کا معاوضہ مانگ رہی ہے لیکن مرکزاس کی بات نہیں سن رہا ہے۔ مرکز نے اپنے حلف نامہ میں دہلی۔ این سی آر میں آلودگی پر قابو پانے کمیشن فار ایرکوالٹی مینجمنٹ کی جاری کردہ ہدایات کی نشاندہی کی۔ ملک کی سب سے بڑی عدالت دہلی اور این سی آر میں فضائی آلودگی سے متعلق ایک درخواست کی سماعت کررہی ہے۔ بنچ نے ہفتہ کے دن کہا تھا کہ ہم اپنے گھروں میں تک ماسک لگانے پر مجبور ہیں۔

 پی ٹی آئی کے بموجب دہلی میں فضائی آلودگی کے مدنظر وزیر ماحولیات گوپال رائے نے چہارشنبہ کے دن کہا کہ حکومت نے تاحکم ثانی تمام تعلیمی ادارے بند رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ تعمیراتی سرگرمیاں 21  نومبر تک ممنوع ہوں گی۔ حکومت دہلی نے اپنے ملازمین کے لئے گھر سے کام (ورک فرم ہوم) کرنے کو اتوار تک توسیع دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔ متعلقہ محکموں کے عہدیداروں کے ساتھ اعلیٰ سطح کے اجلاس کے بعد انہوں نے کہا کہ پبلک ٹرانسپورٹ سسٹم کو مستحکم کرنے ایک ہزار خانگی سی این جی بسیں کرایہ پر لی جائیں گی۔ یہ عمل جمعرات سے شروع ہوجائے گا۔ غیرضروری اشیاء لانے والے ٹرکس کا دہلی میں داخلہ ممنوع ہوگا۔

 گوپال رائے نے کہا کہ دہلی میٹرو اور ڈی ٹی سی(دہلی ٹرانسپورٹ کارپوریشن) نے دہلی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھاریٹی کو لکھا ہے کہ میٹرو ٹرینوں اور سرکاری بسوں میں لوگوں کو کھڑے ہوکر سفر کرنے کی اجازت دی جائے۔ محکمہ ٹرانسپورٹ نے 10-15 سال پرانی ڈیزل اور پٹرول گاڑیوں کی فہرست ٹریفک پولیس کو فراہم کردی ہے تاکہ وہ ان گاڑیوں کو سڑکوں پر چلنے سے روکے۔ فائر بریگیڈ کی مشینیں دہلی کے انتہائی آلودہ 13 مقامات پر پانی کا چھڑکاؤ کریں گی۔ شہر میں اس مقصد سے 372 ٹینکرس پہلے ہی لگے ہوئے ہیں۔

 قبل ازیں کمیشن فار ایرکوالٹی مینجمنٹ (سی اے سی ایم) نے منگل کی رات دیر گئے ہدایت دی تھی کہ قومی دارالحکومت علاقہ (این سی آر) میں اسکول‘ کالجس اور تعلیمی ادارے تاحکم ثانی بند رکھے جائیں۔ صرف آن لائن تعلیم کی اجازت ہوگی۔ دہلی کے اطراف 300 کیلو میٹر کے دائرہ میں واقع 11 تھرمل پاور پلانٹس میں صرف پانچ 30  نومبر تک کام کریں گے۔ کمیشن نے دہلی اور این سی آر ریاستوں کو ہدایت دی کہ وہ 21  نومبر تک تعمیراتی سرگرمیاں اور عمارتوں کو منہدم کرنے کا کام روک دیں۔ غیرضروری سامان لانے والے ٹرکس اتوار تک دہلی میں داخل نہ ہوں۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.