راشن کارڈ کی درخواست، آٹھ سال سے زیر التوا، حکومت کو عدالت کی نوٹس

دہلی ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ ورکر کی جانب سے راشن کارڈ کی اجرائی کیلئے درخواست پیش کئے جانے کے باوجود اس کی یکسوئی نہیں کی گئی ہے اور یہ درخواست آٹھ سال سے زیر التواء ہے۔

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ نے یومیہ اجرت پر کام کرنے والے ورکر کیلئے راشن کارڈس کی اجرائی میں تاخیر پر حکومت سے استفسار کیا ہے۔عدالت نے کہا کہ آٹھ سال سے اس مسئلہ کی یکسوئی نہیں کی گئی ہے جس کی وجہ ورکر کیلئے مسائل اور مشکلات پیش آرہی ہیں۔

دہلی ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ ورکر کی جانب سے راشن کارڈ کی اجرائی کیلئے درخواست پیش کئے جانے کے باوجود اس کی یکسوئی نہیں کی گئی ہے اور یہ درخواست آٹھ سال سے زیر التواء ہے۔

جسٹس ریکھا پاٹل نے ورکر کی پیش کردہ درخواست پر نوٹس جاری کی اور شہر کی حکومت سے اس تعلق سے اپنے موقف کی وضاحت کرنے کیلئے کہا ہے اور کہا کہ ورکر نے درکار تمام تفصیلات فراہم کردی ہیں اس کے باوجود راشن کارڈ اجراء نہیں کیا گیا ہے۔

درخواست گذار نے الزام عائد کیا ہے کہ راشن کارڈ کیلئے کئی مرتبہ درخواست پیش کئے جانے اور بارہا توجہ مبذول کروانے کے باوجود حکام کوئی کاروائی نہیں کی ہے۔

متعلقہ
ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.