سپریم کورٹ کیلئے تمام 9 ججوں کے نام منظور

کرناٹک ہائی کورٹ کی جسٹس بی وی ناگ رتنا‘ ہندوستان کی پہلی خاتون چیف جسٹس بننے کی لائن میں ہیں۔ جسٹس ناگ رتنا کے والد جسٹس ای ایس وینکٹ رامیا 1989 میں چند ماہ تک چیف جسٹس آف انڈیا کے عہدہ پر فائز رہے تھے۔

نئی دہلی: مرکز نے سپریم کورٹ کالجیم کی جانب سے سفارش کردہ تمام 9 ججس کے ناموں کو منظوری دے دی ہے۔ ان میں 3 خواتین جج بھی شامل ہیں۔ ان سب کا سپریم کورٹ میں تقرر کیا جائے گا۔

ججس کے ناموں کو منظوری کے لئے صدرجمہوریہ کے پاس روانہ کیا گیا ہے۔ چیف جسٹس این وی رمنا اور جسٹس یو یو للت‘ جسٹس اے ایم کھنولکر‘ جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ اور جسٹس ایل ناگیشور راؤ پر مشتمل سپریم کورٹ کے کالجیم نے 9ناموں کی سفارش کی تھی جن میں ہائی کورٹ کے 8 ججس اور ایک سینئر وکیل شامل ہیں۔

ان سب کا عدالت ِ عظمیٰ میں تقرر کیا جائے گا۔ کرناٹک ہائی کورٹ کی جسٹس بی وی ناگ رتنا‘ ہندوستان کی پہلی خاتون چیف جسٹس بننے کی لائن میں ہیں۔ جسٹس ناگ رتنا کے والد جسٹس ای ایس وینکٹ رامیا 1989 میں چند ماہ تک چیف جسٹس آف انڈیا کے عہدہ پر فائز رہے تھے۔

سپریم کورٹ کے جج جسٹس نوین سنہا 18 اگست کو ریٹائر ہوئے جس کی وجہ سے عدالت ِ عظمیٰ میں 10جائیدادیں مخلوعہ ہوگئیں جبکہ 35 عہدوں کے لئے منظوری دی گئی ہے۔

ستمبر 2019 کے بعد سے کوئی تقررات نہیں ہوئے۔ 9 ججوں کی حلف برداری کے بعد عدالت ِ عظمیٰ میں صرف ایک جائیداد مخلوعہ رہ جائے گی۔ کالجیم کی جانب سے منتخب کردہ دیگر 2 خاتون ججوں میں تلنگانہ ہائی کورٹ کی چیف جسٹس ہیما کوہلی اور گجرات ہائی کورٹ کی جج جسٹس بیلا ترویدی شامل ہیں۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.