عدالتیں مندرکے رسومات میں مداخلت نہیں کرسکتیں : سپریم کورٹ

چیف جسٹس این وی رامنا کی زیر صدارت بنچ نے کہاکہ دستوری عدالتیں مندر میں کس طرح رسومات انجام دی جاتی‘کس طرح ناریل پھوڑا جائے اورمورتی کوکس طرح پھولوں کا ہار پہنایا جائے اس تعلق سے مداخلت نہیں کرسکتی۔

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے آج کہاکہ وہ مندر کے امور میں مداخلت نہیں کرسکتی اورتروپتی بالاجی مندر کی بعض رسومات میں مبینہ بے قاعدگیوں کے تعلق سے پیش کردہ درخواست پرکوئی احکامات جاری نہیں کرے گی۔

 چیف جسٹس این وی رامنا کی زیر صدارت بنچ نے کہاکہ دستوری عدالتیں مندر میں کس طرح رسومات انجام دی جاتی‘کس طرح ناریل پھوڑا جائے اورمورتی کوکس طرح پھولوں کا ہار  پہنایا جائے اس تعلق سے مداخلت نہیں کرسکتی وہ روزمرہ کے امور کے تعلق سے کچھ نہیں کہہ سکتی بنچ نے تروپتی بالاجی مندر میں بعض امور کے تعلق سے مبینہ بے قاعدگیوں کی جانب توجہ مندول کرداتے ہوئے پیش کردہ درخواست پر کوئی احکام جاری کرنے سے انکار کردیاہے۔

بنچ جوجسٹس اے ایس بوپنا اور جسٹس ہیماکوہلی پربھی مشتمل ہے کہاکہ اس طرح کے امورکے تعلق سے راٹ درخواست میں فیصلہ نہیں کیاجاسکتا۔سرواری دادا پیٹشنران‘رسن مندر کے بعض رسومات میں مبینہ بے قاعدگیوں کی جانب توجہ مبذول کرواتے ہوئے درخواست پیش کی تھی جس کے بعد بنچ نے کہاکہ عدالتوں کس طرح مداخلت کرتے ہوئے احکامات جاری کرے گی؟۔

سپریم کورٹ نے مندر انتظامیہ سے کہاکہ وہ درخواست گزارکی شکایت پرتوجہ دے اوراگر مبینہ بے قاعدگیاں برقرار رہی تو درخواست گزار مناسب فورم سے رجوع  ہوسکتا ہے۔لارڈوینکٹیشورسوامی کے بھگت سرواری دادا نے تروپتی مندرمیں سیواس اور رسومات میں بے قاعدگیوں کاالزام عائد کیا ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.