ملک بچانے کیلئے کانگریس کو بچانا ضروری ہے: کنہیا کمار

اس درمیان کنہیا کمار کے ساتھ آج ہی کانگریس کا اسٹیج شیئر کرنے والے گجرات کے آزاد رکن اسمبلی جگنیش میوانی نے واضح کیا کہ وہ کانگریس کی آئیڈیالوجی میں شامل ہو چکے ہیں لیکن وہ ابھی ٹیکنیکلی کانگریس پارٹی کے ساتھ بہ ضابطہ وابستہ نہیں ہوئے ہیں۔

نئی دہلی: جواہر لعل نہرو یونیورسٹی طلبہ یونین کے سابق صدر کنہیا کمار نے منگل کو کانگریس میں شمولیت کے بعد کہا کہ ملک ایک سنگین خطرے سے گزر رہا ہے اس لیےملک کو بچانے کے لیے ’’سب سے جمہوری پارٹی کانگریس ‘‘ کوبچانا ضروری ہے۔

اس درمیان کنہیا کمار کے ساتھ آج ہی کانگریس کا اسٹیج شیئر کرنے والے گجرات کے آزاد رکن اسمبلی جگنیش میوانی نے واضح کیا کہ وہ کانگریس کی آئیڈیالوجی میں شامل ہو چکے ہیں لیکن وہ ابھی ٹیکنیکلی کانگریس پارٹی کے ساتھ بہ ضابطہ وابستہ نہیں ہوئے ہیں۔

میوانی نے کہا ، ’میں نے تکنیکی طور پر ابھی تک پارٹی میں باضابطہ طور پر شمولیت اختیار نہیں کی ہے لیکن کانگریس کی آئیڈیالوجی سے وابستہ ہو چکا ہوں‘۔

انہوں نے کہا کہ ایک نئی تحریک شروع ہونے والی ہے ، سب کو اکٹھا ہونا پڑے گا ، تبھی ملک بچے گا۔ ساتھ مل کر لڑیں گے اور ملک کو بچائیں۔ پورے ملک میں جائیں گے اور لوگوں کو جوڑیں گے‘۔

کنہیا کمار نے یہاں پارٹی ہیڈ کوارٹر میں نامہ نگاروں کو بتایا کہ کانگریس نے ہندوستان کی غور و خوض کی روایت اور سوچ کو آگے بڑھانے کا کام کیا ہے اور آج یہ چیزیں خطرے میں ہیں ، اس لیے وہ انہیں بچانے کے لیے کانگریس میں شامل ہوئے ہیں۔ یہ ملک گاندھی ، نہرو ، بھگت سنگھ ، امبیڈکر ، مولانا آزاد ، جیوتیبا پھولے کا ہے جسے بچانا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔

کانگریس کو بڑا جہاز قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اگر اسے نہ بچایا گیا تو چھوٹی کشتیاں بچ نہیں پائیں گی۔ ملک میں ایک نظریاتی جدوجہد چھڑی ہے ، صرف کانگریس ہی اس کی قیادت کر سکتی ہے ، اگر کانگریس بچے گی تو لاکھوں کروڑوں نوجوانوں کی امیدیں بچیں گی۔ آئیڈیالوجی کی تنگ نظری کو توڑنے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج ملک 1947 سے پہلے کے دور میں پہنچ چکا ہے۔ ملک ہم سب کا ہے ، اس لیے اسے بچانا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔

راشٹریہ دلت ادھیکار منچ کے کنوینر جگنیش میوانی نے وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ گجرات سے شروع ہونے والی کہانی ، گذشتہ چھ سات سالوں میں جو تباہی مچی ہے وہ سب کے سامنے ہے۔ اس وقت آئین خطرے میں ہے ، کچھ بھی کر کے ہمیں آئین کو بچانا ہے ، اس کے لیے ہم اس کے ساتھ کھڑے ہیں جس نے ملک کی آزادی کی جنگ لڑی۔آئیڈیا آف انڈیا کو بچانا ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.