مودی حکومت اب چین کے قبضہ کا سچ مان لے: راہول گاندھی

سابق صدر کانگریس راہول گاندھی حقیقی خط قبضہ (ایل اے سی) کی صورتِ حال خاص طورپر مشرقی لداخ میں ٹکراؤ کے مسئلہ پر حکومت پر سوال اٹھاتے رہے ہیں۔

نئی دہلی: زرعی قوانین کی تنسیخ کے وزیراعظم کے اعلان کے ایک دن بعد کانگریس قائد راہول گاندھی نے ہفتہ کے دن یہ کہتے ہوئے حکومت کو نشانہ ئ تنقید بنایا کہ ”چین کے قبضہ“ کی سچائی بھی اب تسلیم کرلینی چاہئے۔ کانگریس‘ چین کے ساتھ سرحدی کشیدگی سے نمٹنے کے سلسلہ میں حکومت کو نشانہ تنقید بناتی رہی ہے۔ اس کا الزام ہے کہ حکومت نے ہندوستان کی علاقائی سالمیت پر سمجھوتہ کرلیا۔ مرکز نے اس الزام کی تردید کی۔

راہول گاندھی نے کہا کہ چین کے قبضہ کا سچ اب تسلیم کرلینا چاہئے۔ انہوں نے ہندی میں یہ ٹویٹ مودی حکومت کے کل کے فیصلہ کے پس منظر میں کی۔ سابق صدر کانگریس حقیقی خط قبضہ (ایل اے سی) کی صورتِ حال خاص طورپر مشرقی لداخ میں ٹکراؤ کے مسئلہ پر حکومت پر سوال اٹھاتے رہے ہیں۔ ہندوستان اور چین نے جمعرات کے دن آمادگی ظاہر کی کہ دونوں افواج کو پیچھے ہٹانے کا مقصد پورا کرنے جلد سے جلد 14 ویں دور کی فوجی بات چیت کی جائے گی۔

پینگانگ جھیل علاقہ میں پرتشدد جھڑپ کے بعد گزشتہ برس 5 مئی کو ہندوستانی اور چینی فوجیوں میں ٹکراؤ ہوگیا تھا۔ دونوں افواج نے کمک بڑھادی تھی۔ انہوں نے اپنے ہزاروں فوجی وہاں سازوسامان کے بعد تعینات کردیئے تھے۔

گزشتہ برس 15 جون کو وادی گالوان میں ہلاکت خیز جھڑپ کے بعد کشیدگی مزید بڑھ گئی تھی۔ کئی ادوار کی فوجی اور سفارتی بات چیت کے بعد دونوں ممالک نے فروری اور اگست میں پینگانگ جھیل کے جنوبی کناروں اور گوگرا علاقہ سے اپنی افواج پیچھے ہٹالی تھیں۔ حساس علاقہ میں فی الحال سرحد کے دونوں جانب 50 ہزار تا 60ہزار فوجی تعینات ہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.