نوٹ بندی کے 5 سال مکمل، یوتھ کانگریس کا احتجاج

یوتھ کانگریس سربراہ بی وی سرینواس اور دیگر ورکرس مظاہرہ کے لئے آر بی آئی کے سامنے پہنچ گئے تھے۔ انہیں روکا گیا اور مندر مارگ پولیس اسٹیشن میں زیرحراست رکھا گیا۔

نئی دہلی: یوتھ کانگریس نے پیر کے دن قومی دارالحکومت میں ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) کے سامنے مظاہرہ کیا۔ اس نے 5 سال قبل مرکزی حکومت کی طرف سے کی گئی نوٹ بندی کے خلاف یہ احتجاج کیا۔ اس نے کہا کہ نوٹ بندی نے معیشت کو تباہ کردیا۔

یوتھ کانگریس سربراہ بی وی سرینواس اور دیگر ورکرس مظاہرہ کے لئے آر بی آئی کے سامنے پہنچ گئے تھے۔ انہیں روکا گیا اور مندر مارگ پولیس اسٹیشن میں زیرحراست رکھا گیا۔

سرینواس نے کہا کہ 5 سال قبل وزیراعظم نے جو نوٹ بندی کی تھی اس نے ملک کی معیشت کی رفتار سست کردی۔ وزیراعظم کا نوٹ بندی کا فیصلہ ماسٹر اسٹروک کے بجائے کیاٹااسٹروف ثابت ہوا۔

نوٹ بندی کے ذریعہ دہشت گردی کی روک تھام کا دعویٰ جملہ بازی نکلا۔ نوٹ بندی نے ملک کے شہریوں کو معاشی مندی میں دھکیل دیا۔ وزیراعظم مودی نے نوٹ بندی کے اپنے فیصلہ کو حق بجانب ٹھہرانے نقلی کرنسی نوٹوں کو سسٹم سے نکال باہر کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

کانگریس قائد نے کہا کہ نوٹ بندی سے نہ تو کرپشن ختم ہوا اور نہ ہی دہشت گردی۔ نوٹ بندی اپنا ایک بھی ہدف پورا نہیں کرسکی۔ سرینواس نے کہا کہ مودی جی اور بی جے پی نے کہا تھا کہ نوٹ بندی سے کالابازاری ختم ہوجائے گی اور ملک ترقی کرے گا لیکن تازہ اعدادوشمار کے مطابق ہندوستان کی جی ڈی پی(مجموبی قومی پیداوار) کافی نیچے چلی گئی ہے۔ بے روزگاری سب سے زیادہ ہے اور غربت کا دور دورہ۔

بی جے پی نے ملک کو اندھیرا میں دھکیل دیا۔ تمام بڑے اور چھوٹی تاجر متاثر ہوئے لیکن متوسط طبقہ اور غریب غرباء زیادہ متاثر ہوئے۔ یوتھ کانگریس قائد نے الزام عائد کیا کہ نوٹ بندی‘ کالادھن کے خلاف جنگ نہیں تھی بلکہ غربا اور عام شہریوں کے خلاف جنگ تھی۔ نوٹ بندی اپنا ٹارگٹ پورا نہیں کرسکی۔ اس مشق کی ناکامی کے لئے وزیراعظم کو ملک کے عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.