کانگریس کا 14 نومبر سے جن جاگرن ابھیان

کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال نے پریس کانفرنس میں الزام عائد کیا کہ بڑھتے داموں نے لوگوں کی زندگیاں برباد کردی ہیں۔ عوام کی پریشانیاں بڑھتی جارہی ہیں۔

نئی دہلی: کانگریس، مہنگائی کے مسئلہ کو اجاگر کرنے 14 نومبر سے 15 روزہ ملک گیر احتجاجی پروگرام شروع کرے گی۔

کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال نے پریس کانفرنس میں الزام عائد کیا کہ بڑھتے داموں نے لوگوں کی زندگیاں برباد کردی ہیں۔ عوام کی پریشانیاں بڑھتی جارہی ہیں۔

مندی‘ بے روزگاری کی اونچی شرح، کسانوں کی بدحالی‘ غربت اور بھوک کی بڑھتی سطح اور معیشت کی تباہی کی وجہ سے یہ سب کچھ ہوا ہے۔مہنگائی کے مسئلہ پر مودی حکومت کو نشانہ تنقید بناتے ہوئے کانگریس جنرل سکریٹری رندیپ سنگھ سرجے والا نے کہا کہ مودی حکومت سب سے مہنگی حکومت ثابت ہوئی ہے۔

وینوگوپال نے کہا کہ سرسوں اور دیگر خوردنی تیلوں کی قیمت گزشتہ ایک برس میں دُگنی ہوگئی۔ موسمی سبزیوں کے دام ایک ماہ میں 40تا 50 فیصد بڑھ گئے۔ پکوان گیس سلنڈر ایک سال میں 50 فیصد مہنگا ہوگیا۔ وہ اب 900 تا 1000 روپے ہے۔اسی طرح گزشتہ 18ماہ میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں فی لیٹر بالترتیب 34 روپے 38پیسے اور 24 روپے 38 پیسے کا اضافہ ہوا۔

کمر توڑ مہنگائی‘ غیرمعمولی بے روزگاری اور نوکریاں جانے سے عام آدمی کی زندگی دوبھر ہوگئی ہے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ کووِڈ کے دوران 14 کروڑ نوکریاں گئیں۔ یومیہ اجرت پر کام کرنے والے کروڑوں ورکرس اور تنخواہ یاب طبقہ کی تنخواہ 50 فیصد گھٹ گئی۔ بے روزگاری کی شرح سب سے زیادہ 8-9 فیصد ہے۔

کانگریس زیرقیادت یو پی اے نے اپنی 10 سالہ حکومت کے دوران 27 کروڑ ہندوستانیوں کو سطح خط ِ غربت (بی پی ایل) سے اوپر اٹھایا تھا لیکن پچھلے دوسال میں مودی حکومت نے 23کروڑ ہندوستانیوں کو پھر سے خط ِ غربت سے نیچے ڈھکیل دیا۔

اس کے لئے کانگریس قائد نے عظیم پریم جی یونیورسٹی کی تازہ رپورٹ کا حوالہ دیا۔ کانگریس قائد ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ احتجاج کے دوران جسے جن جاگرن ابھیان کا نام دیا گیا ہے‘ کانگریس ورکرس ملک بھر میں زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچیں گے تاکہ سی این جی‘ پکوان گیس‘ ڈیزل پٹرول‘ خوردنی تیل‘ دالوں اور دیگر اشیائے ضروریہ کے داموں میں غیرمعمولی اضافہ کے خلاف عوام کی آواز بلند کی جائے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.