کووی شیلڈ کے معاملہ میں امتیازی سلوک برداشت نہیں کیا جائے گا : شرنگلا

کووی شیلڈ ہندوستان میں ایک برطانوی کمپنی کے لائسنس سے بنائی گئی ہے۔ برطانیہ میں اسے 50 لاکھ سے زائد ویکسین دی گئی ہیں۔ ایسی صورتحال میں برطانیہ کی طرف سے کووی شیلڈ کو تسلیم نہ کرنا ایک امتیازی پالیسی ہے۔

نئی دہلی: ہندوستان نے آج کہا کہ اگر کووی شیلڈ کو تسلیم کرنے کے معاملے پر برطانیہ اور دیگر ممالک کی طرف سے امتیازی سلوک ہوتا ہے تو ہم ‘جیسے کو تیسا’ کی طرز پر بھی برتاؤ کریں گے اور کووی شیلڈ کو منظوری نہ دینے والے ممالک کے ویکسین کو ہندوستان میں منظوری نہیں دی جائے گی سکریٹری خارجہ ہرش وردھن شرنگلا نے یہ بات آج یہاں وزیر اعظم نریندر مودی کے کل سے شروع ہونے والے چار روزہ امریکی دورے پر بریفنگ دینے کے لیے منعقدہ پریس کانفرنس میں ایک سوال کے جواب میں کہی ۔

 انہوں نے کہا کہ کووی شیلڈ کو منظوری دینے کے حوالے سے برطانیہ کے ساتھ بات چیت جاری ہے۔ یہ ویکسین ہندوستان میں ایک برطانوی کمپنی کے لائسنس سے بنائی گئی ہے۔ برطانیہ میں اسے 50 لاکھ سے زائد ویکسین دی گئی ہیں۔ ایسی صورتحال میں برطانیہ کی طرف سے کووی شیلڈ کو تسلیم نہ کرنا ایک امتیازی پالیسی ہے۔

شرنگلا نے کہا کہ وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے برطانیہ کے نئے وزیر خارجہ سے مل کر اس مسئلہ کو سختی سے اٹھایا ہے۔ انہیں معلوم ہوا ہے کہ اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے کچھ یقین دہانیاں موصول ہوئی ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ اگر ویکسین کو منظوری دینے کے حوالے سے امتیازی سلوک ہوگا تو ہم بھی ’جیسے کو تیسا’‘کی طرز پر برتاؤ کریں گے اور جو کوویشیلڈ کو منظوری نہیں دیں گے تو ہم ان کی ویکسین کو منظوری نہیں دیں گے۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.