گردہ‘ پھیپھڑے میں بلیک فنگس کے پہلے کیس کا کامیاب علاج

بلیک فنگس‘ ناک سے بائیں پھیپھڑے اور دائیں گردہ تک پھیل گیا تھا۔کووِڈ انفیکشن کے بعد دنیا میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا کیس ہے۔ مریض‘ رنجیت کمار سنگھ کو مابعد کووِڈ علامت کی وجہ سے ہسپتال میں شریک کردیا گیا تھا۔

نئی دہلی: غازی آباد کے ایک 34 سالہ شخص کا بلیک فنگس کا کامیاب علاج ہوا ہے۔ اسے کووِڈ انفیکشن سے صحت یاب ہونے کے بعد بلیک فنگس ہوا تھا‘ کیس پیچیدہ تھا۔ نئی دہلی کے سرگنگارام ہاسپٹل کے ڈاکٹروں نے پیر کے دن یہ بات بتائی۔

بلیک فنگس‘ ناک سے بائیں پھیپھڑے اور دائیں گردہ تک پھیل گیا تھا۔کووِڈ انفیکشن کے بعد دنیا میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا کیس ہے۔ مریض‘ رنجیت کمار سنگھ کو مابعد کووِڈ علامت کی وجہ سے ہسپتال میں شریک کردیا گیا تھا۔

اسے سانس لینے میں دشواری آرہی تھی۔ بلغم میں خون آرہا تھا اور تیز بخار تھا۔ پھیپھڑے اور گردے کے ایک حصہ کو شدید نقصان پہنچ چکا تھا۔ بلیک فنگس تیزی سے پھیلتا ہے اس لئے اس کے پھیپھڑے کا ایک حصہ اور دایاں گردہ فوری نکال دیا گیا۔ دوران سرجری پتہ چلا کہ بلیک فنگس جگر اور بڑی آنت تک پھیل رہا تھا۔ بڑی مشکل سے گردہ نکالا گیا۔ مریض کو 45 دن بعد ڈسچارج کیا گیا۔ وہ اب ٹھیک ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.