ہندوستان کو بدنام کرتے ہوئے پاکستانی چاول کی فروخت

ڈِس انفولیاب نے ایک رپورٹ میں کہا کہ 30 ستمبر سے پاکستانی اکاؤنٹس نے ہندوستانی غذائی اشیاء کے بائیکاٹ کے ذریعہ ہندوستان کو بدنام کرنے کی ایک اور مہم شروع کی ہے۔

نئی دہلی: پاکستان باسمتی چاول کے کریڈٹ پر ہاری ہوئی جنگ لڑرہا ہے۔ پاکستانی چاول کی ایک کھیپ حال میں یوروپین یونین میں مسترد ہوچکی ہے۔ کھلے بازار میں وہ چاول فروخت نہیں کرسکتا۔ ففتھ جنریشن وارفیر اِسکلس کی بدولت وہ اسے سوشیل میڈیا کے ذریعہ بیچ سکتا ہے۔

ڈِس انفولیاب نے ایک رپورٹ میں کہا کہ 30 ستمبر سے پاکستانی اکاؤنٹس نے ہندوستانی غذائی اشیاء کے بائیکاٹ کے ذریعہ ہندوستان کو بدنام کرنے کی ایک اور مہم شروع کی ہے۔ ”بائیکاٹ بزنس“ معاشی منطق کے ساتھ کیا جارہا ہے۔

 مہم کا تجزیہ کیا جائے تو پاکستان کی ٹرول فیکٹریوں کی میکانکس کے بارے میں دلچسپ تفصیلات سامنے آتی ہیں۔ یہ اکاؤنٹس ڈیجیٹل پاکستان کے مختلف ٹرول گروپس کا حصہ ہیں۔ اس بات کی توثیق نہیں ہوسکی کہ چاول کی جن برانڈس کی تشہیر کی جارہی ہے وہ پاک فوج کی ہیں یا کسی اور کی۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.