1947میں کونسی جنگ ہوئی تھی؟: کنگنا رناوت

کنگنا نے کہاکہ مہاتما گاندھی پر بھگت سنگھ کو مرنے کے لئے چھوڑدینے اور سبھاش چندر بوس کی مدد نہ کرنے کا الزام عائد کیا۔ اس نے ایک کتاب سے اقتباس نقل کیا اور کہا کہ اسے 1857 کی اجتماعی جدوجہد آزادی کا پتہ ہے لیکن 1947 کی جنگ کا نہیں۔

نئی دہلی: ہندوستان کی آزادی کو ”بھیک“ قراردینے پر چوطرفہ تنقید جھیل رہی اڑیل کنگنا رناوت نے ہفتہ کے دن سوال کیا کہ 1947 میں کونسی جنگ ہوئی تھی۔اس نے کہا کہ کوئی بھی اس کے اس سوال کا جواب دے دے تو وہ اپنا پدم شری ایوارڈ لوٹادے گی۔ اشتعال انگیز بیانات کے لئے جانی جانے والی اداکارہ نے انسٹا گرام پر کئی سوالات پوسٹ کئے۔ اس نے بٹوارہ اور مہاتماگاندھی کو بھی گھسیٹا۔ اس نے مہاتما گاندھی پر بھگت سنگھ کو مرنے کے لئے چھوڑدینے اور سبھاش چندر بوس کی مدد نہ کرنے کا الزام عائد کیا۔ اس نے ایک کتاب سے اقتباس نقل کیا اور کہا کہ اسے 1857 کی اجتماعی جدوجہد آزادی کا پتہ ہے لیکن 1947 کی جنگ کا نہیں۔

34 سالہ اداکارہ نے اپنی انسٹا گرام اسٹوریز میں انگریزی میں تفصیلی پوسٹ لکھا کہ 1857 کا مجھے پتہ ہے لیکن 1947 میں کونسی جنگ ہوئی تھی مجھے نہیں معلوم۔ اگر کوئی میری معلومات بڑھادے تو میں اپنا پدم شری واپس کردوں گی اور معافی مانگ لوں گی۔ اداکارہ نے چہارشنبہ کی شام ایک نیوز چیانل کے پروگرام میں یہ کہہ کر تنازعہ پیدا کردیا تھا کہ ہندوستان کو حقیقی آزادی 2014میں اس وقت ملی جب مودی حکومت بنی۔ 1947 کی آزادی بھیک تھی۔

پدم شری ایوارڈ لینے کے 2 دن بعد اس کے اس متنازعہ بیان نے ہنگامہ برپا کردیا۔ سیاسی قائدین‘ ماہرین تعلیم‘ مورخین‘ ساتھی اداکاروں اور دیگر افراد نے اس پر تنقید کی۔ بی جے پی قائدین نے تک اداکارہ کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔ جودھپور میں جمعہ کے دن مہیلا کانگریس نے اس کے خلاف شکایت درج کرائی۔ اندور میں مجاہدین آزادی کے ایک گروپ نے اس کا پتلا نذرآتش کیا۔ ممبئی میں این ایس یو آئی ورکرس نے اداکارہ کے بنگلہ کے باہر مظاہرہ کیا۔

 بی جے پی رکن پارلیمنٹ ورون گاندھی‘ مہاراشٹرا بی جے پی کے صدر چندرکانت پاٹل‘ مہاراشٹرا کے وزیر نواب ملک اور چھتیس گڑھ کے چیف منسٹر بھوپیش بگھیل نے کنگنا رناوت پر تنقید کی۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.