اترپردیش میں اندھیری نگری چوپٹ راج :پرینکا گاندھی

پرینکا نے عوام سے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے ایسے لیڈروں کا انتخاب کیا ہے جو آپ کے حقوق تلف کرتے ہیں جھوٹے وعدے کرتے ہیں۔

مرادآباد: کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے جمعرات کو ریاستی حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ ریاست میں روزگار سے لے کر کاروبار تک تباہ حال ہیں۔ مہنگائی شباب پر ہے اور بی جے پی دعوی کررہی ہے کہ اترپردیش ا’اتم پردیش’بننے کی جانب مائل ہے۔ کانگریس کے قومی صدر نے یہا ں منعقد ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اترپردیش میں’اندھیر نگری چوپٹ راجا’ کی مثل صادق آتی ہے۔ ریاست میں ٹی ای ٹی کے پیپرلیک ہورہے ہیں۔ نوجوانوں کی سالوں کی محنت بے کار چلی گئی۔ نوجوانوں میں بے حد مایوسی ہے۔ اس دوران لکھنؤ کی ایک خاتون سے بات ہوئی۔اس نے بتایا کہ گھروں میں کام کرکے بیٹی کو پڑھایا لیکن سب بے کار چلا گیا۔ پرچہ مافیا،کانکنی مافیا،ندی مافیا،چاروں جانب مافیا ہی مایفا ہیں۔غنیمت ہے کہ لوگوں کے سانسوں پر کوئی مافیا نہیں ہے۔

پرینکا نے عوام سے ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے ایسے لیڈروں کا انتخاب کیا ہے جو آپ کے حقوق تلف کرتے ہیں جھوٹے وعدے کرتے ہیں۔ انہوں نے کسان تحریک کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ مضبوط ارادوں سے سب کچھ بدلا جاسکتا ہے۔ اترپردیش کی تصویر بدلی جاسکتی ہے۔ کسانوں کے عزم مصمم کے آگے گالے قوانین واپس لئے گئے۔ پرینکا نے وعدہ کیا کہ ریاست میں حکومت بننے پر کسانوں کی دھان 2500 روپئے اور گنا 400 روپئے کوئنتل میں خریدا جائے گا۔ مرادآباد کو اسمارٹ سٹی بنانے کی تیقن دیتےہوئے کانگریس جنرل سکریٹری نے کہا کہ خواتین کو مضبوط کرنے کی بات کررہے ہیں لیکن محض ایک سلنڈر دینے سے خواتین کو بااختیار نہیں بنایا جاسکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں آپ کو بااختیار بناؤں گی اور آپ کے لئے لڑونگی۔ اس لئے 40فیصدی سیٹ خواتین کو دی جارہی ہے۔ آپ کی لڑائی لڑنے کوئی نہیں آئے گا میں آپ کے ساتھ کھڑی ہوں۔ سماج وادی پارٹی کو بھی ہدف تنقید بناتے ہوئے پرینکا نے کہا کہ سماج وادی کا نیا نعرہ سنا ہے کہ آرہے ہیں اکھلیش لیکن وہ این آر سی، سی اے اے پر کچھ نہیں بولے۔ مظفر نگر میں نوجوان کا قتل ہوا،قبائلیوں کا قتل کیا گیا۔ اناؤ اور ہاتھرس کے علاوہ لکھیم پورکھیری میں کسانوں کو کچلا گیا۔ کیا اکھلیش آئے؟۔اب انتخابات آگئے تو اکھلیش بھلا کیوں آرہے ہیں؟جبکہ کانگریس گذشتہ پانچ سالوں سے سڑکوں پر لڑائی لڑتی رہی ہے۔ الہ آباد میں ایس ٹی سماج سے وابستہ کنبے کا قتل ہوا اس وقت بی ایس پی ایس پی کیوں آگے نہیں آئے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.