استعفیٰ کے بعد سابق بی جےپی لیڈر سوامی پرساد موریہ کیخلاف وارنٹ گرفتاری جاری

ایم پی‘ ایم ایل اے کورٹ کے مجسٹریٹ یوگیش یادو نے لکھنو میں حکم جاری کیا کہ سوامی پرساد موریہ کو گرفتار کرلیا جائے اور 24 جنوری کو عدالت میں حاضر کیا جائے کیونکہ غیرضمانتی وارنٹ جاری ہونے کے باوجود وہ عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔

لکھنو: اترپردیش کابینہ سے استعفیٰ کے ایک دن بعد سوامی پرساد موریہ کے خلاف ایک عدالت نے وارنٹ گرفتاری جاری کیا ہے۔ ایم پی‘ ایم ایل اے کورٹ کے مجسٹریٹ یوگیش یادو نے لکھنو میں حکم جاری کیا کہ سوامی پرساد موریہ کو گرفتار کرلیا جائے اور 24 جنوری کو عدالت میں حاضر کیا جائے کیونکہ غیرضمانتی وارنٹ جاری ہونے کے باوجود وہ عدالت میں پیش نہیں ہوئے۔

 وکیل انیل کمار تیواری نے 2014 میں میڈیا کے حوالہ سے اس وقت کے بی ایس پی قائد سوامی پرساد موریہ کے خلاف شکایت درج کرائی تھی کہ انہوں نے یہ کہہ کر ہندوؤں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچائی تھی کہ شادیوں میں دیوی دیوتاؤں کی پوجا نہیں کی جانی چاہئے۔ 22 نومبر 2014 کو مجسٹریٹ نے موریہ کو طلب کیا تھا۔

وارنٹ گرفتاری جاری ہونے پر انہوں نے ہائی کورٹ سے رجوع ہوکر 12 جنوری 2016 کو اسٹے لے لیا تھا۔ حال میں سپریم کورٹ نے اسٹے آرڈر برخاست کردیا۔ توقع ہے کہ سوامی پرساد موریہ جمعہ کے دن سماج وادی پارٹی(ایس پی) میں شامل ہوجائیں گے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.