ایک سنیاسی چیف منسٹر، خاندان کی تکالیف نہیں سمجھ سکتا : اکھلیش یادو

خاندان کی پرورش کرنے والا خاندان کی تکلیف کو سمجھ سکتا ہے۔ جس کا خاندان نہیں انہیں کسی کی فکر نہیں۔

باندہ: جس کا کوئی خاندان نہیں وہ عوام کی فکر نہیں کرسکتے، کیوں کہ انہیں خاندان کی کسی تکلیف کا احساس نہیں ہوتا۔ صدر سماج وادی پارٹی اکھلیش یادو نے چیف منسٹر اترپردیش یوگی آدتیہ ناتھ کی درپردہ تنقید کرتے ہوئے آج یہ بات کہی۔

وہ عوام سے جاننا چاہتے ہیں کہ کیا وہ یوگی حکومت چاہتے ہیں یا یوگیا (اہل) حکومت چاہتے ہیں۔ مہوبا کو سماج وادی وجئے رتھ یاترا کی روانگی سے قبل یادو نے کہا کہ ہم اہل خاندان ہیں، اسی لیے ہم کسی مزدور یا کسان کے ارکانِ خاندان کے گذر جانے کے بعد خاندان کو درپیش تکالیف کو سمجھتے ہیں۔

خاندان کی پرورش کرنے والا خاندان کی تکلیف کو سمجھ سکتا ہے۔ جس کا خاندان نہیں انہیں کسی کی فکر نہیں۔ بی جے پی کے ”دمدار سرکار“ کے نعرہ پر یادو نے برجستہ کہا کہ وہ صرف دمدار جھوٹ کہہ سکتے ہیں۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ بی جے پی نے شکشا متراس کو ملازمتوں کا تیقن دیا تھا، تاہم ساڑھے چار سالوں بعد انہوں نے نوجوانوں جو ملازمت کے خواہشمند تھے، کے خوابوں کو روند ڈالا۔ طلبہ کو ٹیابلیٹس اور اسمارٹ فونس فراہم کرنے حکومت کے اقدام پر انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر جو لیاپ ٹیاپ اور اسمارٹ فونس استعمال کرنے کا اہل نہیں، اس سے ایسی سہولتوں کی توقع نہیں کی جاسکتی۔

چیف منسٹر یوگی پر جو گورکھ ناتھ مندر کے مہنت ہیں، درپردہ تنقید کرتے ہوئے صدر ایس پی نے کہا کہ کیا ایک بابا چیف منسٹر لیاپ ٹاپ چلا سکتا ہے؟ یہ بھی سننے میں آیا ہے کہ وہ اسمارٹ فون بھی استعمال نہیں کرسکتے۔ اگر وہ کرسکتے تو ابھی تک حکومت کی جانب سے نوجوانوں کو یہ چیزیں فراہم کردی جاتیں۔

یادو نے الزام عائد کیا کہ یوگی حکومت ٹی ای ٹی کے امتحانی پرچوں کا افشاء دانستہ کرائی ہے، کیوں کہ وہ کامیاب امیدواروں کو ملازمتیں فراہم کرنے کے موقف میں نہیں ہیں۔ انہوں نے وعدہ کیا کہ سماج وادی پارٹی کو اقتدار ملنے پر بیسک ٹیچرس ٹریننگ اور اور بیچلر آف ایجوکیشن کے کامیاب امیدواروں کو ملازمتیں فراہم کریں گے۔

یادو نے کہا کہ حالانکہ بندیل کھنڈ کی عوام نے گذشتہ اسمبلی اور لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کی بھرپور تائید کی ہے، لیکن علاقہ میں کوئی ترقی نہیں دکھائی دیتی۔ اور کہا کہ بندیل کھنڈ پہنچنے پر ڈبل انجن حکومت ٹھپ ہوگئی۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.