جھوٹے گوا پیش کئے جانے کا امکان : راکیش ٹکیٹ

یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ تحقیقاتی ایجنسی مشرا کی تفتیش کے معاملہ میں نرم پڑ گئی ہے۔ ٹکیت نے تحقیقات کو گلدستوں والی پوچھ تاچھ قرار دیا۔

علیگڑھ: مملکتی وزیر داخلہ اجئے مشرا کے بیٹے کی سرخ قالین گرفتاری کے بعد لکھیم پور تشدد کیس کی تحقیقات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے بھارتیہ کسان یونین کے لیڈر راکیش ٹکیت نے آج کہا کہ وزیر کو عہدہ سے برخاست کرنے تک شفاف تحقیقات ممکن نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ اشیش مشرا کی سرخ قالین گرفتاری نے احتجاجی کسانوں کی برہمی میں اضافہ کردیا ہے۔ یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ تحقیقاتی ایجنسی مشرا کی تفتیش کے معاملہ میں نرم پڑ گئی ہے۔ ٹکیت نے تحقیقات کو گلدستوں والی پوچھ تاچھ قرار دیا۔

خیال رہے کہ اشیش مشرا پر الزام ہے کہ وہ 3 اکتوبر کو لکھیم پور کھیری میں احتجاجیوں پر چڑھائی جانے والی کار کے اندر موجود تھے۔ گذشتہ ہفتہ انہیں 12 گھنٹہ طویل پوچھ تاچھ کے بعد گرفتار کیا گیا ہے۔

مقامی عدالت نے اشیش کو تین دن کے لئے پولیس تحویل میں دیا ہے۔ ٹکیت نے تپال ٹاون میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ”ساری دنیا جانتی ہے کہ اگر کوئی وزیر کی کرسی پر بیٹھا رہے تو اس کے بیٹے کی تحقیقات میں انصاف نہیں ہوسکتا جس طریقہ سے تحقیق کی جارہی ہے ہمیں بالکل اطمینان نہیں ہے۔

اشیش مشرا کے دوست انکیت داس کی گرفتاری کے بارے میں سوال پر انہوں نے دعویٰ کیا مزید جھوٹے گواہوں کو پیش کیا جائے گا اور بعض علاقہ میں اجئے مشرا کے اثر کے تحت ذمہ داری اپنے سر لینے کے لئے بھی تیار ہوجائیں گے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.