خواتین کو فوج میں مستقل کمیشن دینے کا انتظام : راج ناتھ سنگھ

سنگھ نے چہارشنبہ کو اترپردیش کے جھانسی میں پہلی جنگ آزادی کی مجاہد مہارانی لکشمی بائی کی جینتی کے موقع پر وزارت دفاع پر منعقد 'راشٹریہ رکچھا سمرپرن پرو' کے افتتاحی تقریب میں یہ اعلان کیا۔

جھانسی: وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے آرمی میں خواتین کو مستقل کمیشن دینے کی جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ اب اہلیت کی بنیاد پر خواتین کو آرمی میں مستقل کمیشن دئیے جانے کا نظام بنایا گیا ہے۔

سنگھ نے چہارشنبہ کو اترپردیش کے جھانسی میں پہلی جنگ آزادی کی مجاہد مہارانی لکشمی بائی کی جینتی کے موقع پر وزارت دفاع پر منعقد ‘راشٹریہ رکچھا سمرپرن پرو’ کے افتتاحی تقریب میں یہ اعلان کیا۔

سنگھ نے کہا کہ آرمی میں خواتین کو مستقل کمیشن کا نظام دینے کے لئے رانی لکشمی بائی جینتی سب سے زیادہ مناسب موقع ہے۔اس موقع پر اترپردیش کے چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ بھی موجود تھے۔

رانی لکشمی بائی جینتی(19نومبر) کے موقع پر وزارت دفاع اور اترپردیش حکومت نے مل کر جھانسی میں تین روزہ پروگرام کا انعقاد کیا گیا ہے۔ اس پروگرام کے اختتام تقریب میں 19 نومبر کو وزیر اعظم نریندر مودی بھی شامل ہونگے۔

اس موقو پر مودی جھانسی میں ڈیفنس انڈسٹرئیل کاریڈور کا افتتاح کریں گے۔انہوں نے کہا’ گذشتہ حکومتوں میں خواتین آرمی میں مستقل کمیشن کا مطالبہ کررہی تھیں۔ فوج میں خواتین کو مستقل کمیشن دیا گیا ہے۔

اب اہلیت اور میرٹ کی بنیاد پر خواتین کو آرمی میں مستقل کمیشن دئیے جانے کا نظام ہے۔سنگھ نے کہا کہ مہاراشٹرا کے پنے میں واقع نیشنل ڈیفنس اکادمی میں بھی خواتین کے لئے دروزے کھولے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آرمی میں خواتین کے لئے محدود مواقع کو اب بہت پختگی فراہم کی گئی ہے۔

دفاعی وزیر نے کہا’ ہماری حکومت نے آرمی کے تینوں باڈی میں خواتین کی شراکت داری بڑھائی گئی ہے۔ آرمی اسکولوں میں بچوں کو ایڈمیشن بھی دیا جاہا ہے۔سنگھ نے کہا کہ ڈیفنس انڈسٹرئیل کاریڈور سے بندیل کھنڈر کی روزگار متعلق ضرورتیں پوری ہونگی ساتھ ہی ملک کے دفاعی آلات کی ضرورتین بھی پوری ہوں گی۔

سنگھ نے کہا’ایک وقت ایسا تھا جب ملک میں 65تا 70فیصدی دفاعی آلات درآمد کیے جاتے تھے آج تصویر بدل گئی ہے۔ ہم نے طے کیا ہے کہ چاہئے حالات کیسے بھی ہوں 64فیصدی تک دنیا کے دوسرے ممالک سے درآمدات نہیں کریں گے۔ہندوستان کی زمین پر بنے دفاعی آلات کا استعمال ہوگا۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.