ذہنی تناؤ کے شکار ڈاکٹر کے ہاتھوں سارے خاندان کا قتل

ذہنی الجھن کا شکار ایک 61 سالہ ڈاکٹر نے یہاں کلیان پور میں واقع اپارٹمنٹ میں ایک لمحہ میں تمام مشکلوں کو ختم کرنے اور وبا کے مصائب سے بچانے اپنی بیوی اور بچوں کو ہلاک کردیا۔ پولیس نے آج یہ بات بتائی۔

کانپور (یوپی): کووِڈ 19 وبا کے سبب ذہنی الجھن کا شکار ایک 61 سالہ ڈاکٹر نے یہاں کلیان پور میں واقع اپارٹمنٹ میں ایک لمحہ میں تمام مشکلوں کو ختم کرنے اور وبا کے مصائب سے بچانے اپنی بیوی اور بچوں کو ہلاک کردیا۔ پولیس نے آج یہ بات بتائی۔ ایک خانگی میڈیکل کالج میں صدر شعبہئ فارنسک سائنس ڈاکٹر سشیل کمار نے ایک مکتوب چھوڑا جس میں تحریر تھاکہ وہ ایک لاعلاج مرض میں مبتلا ہے اور کہا کہ کووِڈ 19 سے کوئی بھی نہیں بچے گا۔

جمعہ کی شام سشیل کمار نے اپنے جوڑواں بھائی سنیل کو فون پر تحریر کیا کہ وہ ہلاکتوں کے بارے میں پولیس کو مطلع کرے۔ سنیل فوری اپارٹمنٹ پہنچا اور اسے باہر سے مقفل پایا۔ ایک سیکوریٹی گارڈ کی مدد سے اس نے دروازہ کا تالا توڑ کر جب اندر داخل ہوا اسے 48 سالہ چندرا پربھا، 18 سالہ شکھر سنگھ متعلّم انجینئرنگ اور ہائی اسکول کی طالبہ خوشی سنگھ کی نعشیں علیحدہ کمروں میں خون میں لت پت دکھائی دیں۔

پولیس کمشنر اسیم ارون نے یہ بات بتائی۔ اس نے فوری پولیس کو ان ہلاکتوں کے بارے میں مطلع کیا اور کہا کہ سشیل ذہنی تناؤ کا شکار تھا۔ ابتدائی تحقیقات سے پتہ چلا کہ تینوں کو جمعہ کی صبح ہلاک کیا گیا۔ موت کا حقیقی پتہ چلانے نعشوں کو پوسٹ مارٹم کے لیے روانہ کیا گیا۔ سشیل نے اپنے مکتوب میں تحریر کیا کہ اپنی ہی لاپرواہی کے سبب وہ اپنے ڈاکٹری پیشہ کی اس سطح پر آگیا تھا کہ جہاں سے فرار ناممکن تھا۔ پولیس کمشنر نے بتایا کہ سشیل کو گرفتار کرنے پولیس کی کئی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.