سوامی پرساد موریہ، سماج وادی پارٹی میں شامل

موریہ نے بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ 2017 میں پسماندہ ذاتوں کو دھوکہ دے کر برسراقتدار آئی تھی۔ بی جے پی نے کیشو پرساد موریہ کو امیدوارِ چیف منسٹری کے طورپر پیش کیا تھا لیکن بعد میں اسکائی لیب کی طرح کسی کو گورکھپور سے لے آئی۔

لکھنو: بی جے پی کے سابق وزرا سوامی پرساد موریہ اور دھرم سنگھ سائنی جمعہ کے دن دیگر ارکان اسمبلی اور ان کے حامیوں کے ساتھ سماج وادی پارٹی(ایس پی) میں باقاعدہ شامل ہوگئے۔

موریہ نے بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ 2017 میں پسماندہ ذاتوں کو دھوکہ دے کر برسراقتدار آئی تھی۔ بی جے پی نے کیشو پرساد موریہ کو امیدوارِ چیف منسٹری کے طورپر پیش کیا تھا لیکن بعد میں اسکائی لیب کی طرح کسی کو گورکھپور سے لے آئی۔

سوامی پرساد موریہ نے کہا کہ اترپردیش کو بی جے پی کی خراب حکمرانی سے آزاد کرانے کی تمام کوششیں کی جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ یوگی آدتیہ ناتھ حکومت نے ریاست کے عوام کو گمراہ کیا۔

میں بی جے پی سے کہنا چاہتا ہوں کہ آج سے اس کی الٹی گنتی شروع ہوگئی ہے۔ سماج وادی پارٹی صدر اکھلیش یادو نے ان قائدین کا اپنی پارٹی میں خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی امیروں کے فائدہ کے لئے غریبوں کو لوٹ رہی ہے۔

ڈپٹی چیف منسٹر کیشوپرساد موریہ پر طنز کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب یہ قائدین یہاں آگئے ہیں‘ پتہ نہیں ان لوگوں کا کیا ہوگا جنہیں اسٹول پر بٹھایا جاتا ہے۔

اتنے سارے قائدین کے سماج وادی پارٹی میں شامل ہونے سے پریشان یوگی آدتیہ ناتھ گورکھپور کے لئے روانہ ہوچکے ہیں۔ اسی دوران سابق وزیر دارا سنگھ چوہان جمعہ کے دن سماج وادی پارٹی میں شامل نہیں ہوئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وہ دیگر مزید ارکان اسمبلی کے ساتھ اتوار کو شامل ہوں گے۔ سوامی پرساد موریہ طاقتور او بی سی قائد ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.