مجلس، یو پی میں 100 نشستوں پرمقابلہ کرے گی: اسد اویسی

صدرمجلس اسدالدین اویسی نے کہا کہ ہم مزید ایک یا دو جماعتوں کے ساتھ بات چیت کررہے ہیں اور آنے والا وقت ہی بتائے گا کہ ہم اتحاد تشکیل دیں گے یا نہیں۔ ہم یقینا انتخابات جیتنے کے موقف میں ہیں۔

لکھنؤ: اترپردیش اسمبلی انتخابات سے قبل کل ہند مجلس اتحادالمسلمین (اے آئی ایم آئی ایم)  نے اعلان کیاہے کہ وہ 403 اسمبلی نشستوں کے منجملہ 100 نشستوں پر مقابلہ کرے گی۔ پارٹی نے کہا ہے کہ وہ اتحاد کیلئے دیگر جماعتوں کے ساتھ بات چیت کررہی ہے۔

صدرمجلس اسدالدین اویسی نے لکھنؤ میں اے این آئی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم مزید ایک یا دو جماعتوں کے ساتھ بات چیت کررہے ہیں اور آنے والا وقت ہی بتائے گا کہ ہم اتحاد تشکیل دیں گے یا نہیں۔ ہم یقینا انتخابات جیتنے کے موقف میں ہیں۔

اُنہوں نے کہاکہ یہ بات سچ ہے کہ اترپردیش میں اے آئی ایم آئی ایم کا وجود بیحد طاقتور ہوگیا ہے اور آج ہم اِس موقف میں ہیں کہ ہم الیکشن جیتیں گے اور کافی ووٹ بھی حاصل کریں گے انشاء اللہ۔ ایک اور سیاسی جماعت راشٹریہ لوک دل (آر ایل ڈی) نے جمعہ کے روز اشارہ دیا تھا کہ وہ ریاست میں سماج وادی پارٹی کے ساتھ اتحاد تشکیل دے گی۔

آر ایل ڈی کے صدر جینت چودھری نے اِس مسئلہ پر گفتگو کرتے ہوئے اے این آئی کو بتایاکہ جاریہ ماہ کے اواخر تک ہم(آر ایل ڈی اور سماجوادی پارٹی) کوئی فیصلہ کریں گے۔ واضح رہے کہ اترپردیش میں 2022 میں اسمبلی انتخابات مقرر ہیں۔

پی ٹی آئی کے بموجب اسد الدین اویسی نے آج مودی کو ملک کا سب سے بڑا ”نوٹنکی باز“(اداکار) قراردیا اور کہاکہ وہ غلطی سے سیاست میں آگے ہیں اگر وہ فلم انڈسٹری میں جاتے تو کوئی اداکار اُن کے سامنے ٹک نہیں پاتا۔

اویسی نے یہاں ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نریندرمودی اِس ملک کے سب بڑے نوٹنکی باز ہیں اور وہ غلطی سے سیاست میں آگئے ہیں ورنہ فلم انڈسٹری والوں کا کیا ہوتا۔ سارے ایوارڈس تو مودی ہی جیت لیتے۔

اُنہوں نے کہاکہ تین زرعی قوانین کی منسوخی کااعلان کرنے کے بعد وزیر اعظم نے کہا تھا کہ اُن کی  ”تپسیا“ میں شائد کچھ کمی رہ گئی ہے۔ اِس سے ہمیں پتہ چلتا ہے کہ مودی کتنے بڑے اداکار ہیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.